AIOU: Assignment No 1 Solution Course Code 203

سوال 1- سائنس کی مختلف شاخوں کی تعریف لکھیں نیز سائنس کی مختلف شاخوں کے آپس میں تعلق پر بحث کریں۔

سائنس کی مختلف شاخوں کی تعریف

فضائیات (Astronomy)

تعریف: فضائیات، چھٹی زمین کے بیرونی حصے، چاند، سیارے، گرہنوں، نجوم اور گلکسیوں کا مطالعہ کرنے والی شاخ ہے۔

تعلق: فضائیات اور فضائی تشخیصیں دنیا کی ہمواری، موسموں، اور زندگی کی بنیادی معلومات فراہم کرتی ہیں۔

کوہشیات (Physics)

تعریف: کوہشیات، مادہ اور ان کے حرکات کا مطالعہ کرنے والی سائنسی شاخ ہے۔

تعلق: کوہشیات دھاتوں، حرارت، برقیات، مغناطیس، اور موجیات جیسے موضوعات پر مبنی ہے۔

کیمیا (Chemistry)

تعریف: کیمیا، مختلف مواد اور ان کے ترکیبات، خصوصیات، اور تبادلے کا مطالعہ کرنے والی سائنسی شاخ ہے۔

تعلق: کیمیا کا تعلق مواد کی ساخت، ترتیب، اور تغییرات سے ہے، جو دوسری شاخوں کے ساتھ بہت گہرا تعلق رکھتی ہے۔

زرعیات (Biology)

تعریف: زرعیات، جانوروں اور نباتات کا مطالعہ کرنے والی سائنسی شاخ ہے۔

تعلق: زرعیات میں جانوری علم، نباتی علم، جینیات، اور علم الاحیاء شامل ہیں۔

انسانیات (Anthropology)

تعریف: انسانیات، انسانی جماعتوں، انسانی تربیت، اور انسانی رفتار کا مطالعہ کرنے والی سائنسی شاخ ہے۔

تعلق: انسانیات اجتماعیات، زبانیات، اور باشندگی کے مختلف پہلوؤں کا مطالعہ کرتی ہے۔

ریاستیات (Political Science)

تعریف: ریاستیات، حکومتوں، سیاست، اور حکومتیں چلانے والی سائنسی شاخ ہے۔

تعلق: ریاستیات اجتماعی، معاشی، اور سیاستی نظامات کا مطالعہ کرتی ہے۔

سائنس کی مختلف شاخوں کے آپس میں تعلق

محاسباتی سائنس (Computer Science)

تعلق: محاسباتی سائنس کوہشیات، کیمیا، اور زرعیات کی شاخوں سے منسلک ہوتی ہے۔ اس میں ڈیٹا تجزیہ، جینیاتی مطالعات، اور محاسبی تجربات شامل ہیں۔

صحت (Health Sciences):

تعلق: صحت کوہشیات، کیمیا، زرعیات، اور انسانیات کے ساتھ منسلک ہوتی ہے۔ یہ علم انسانیات کے مختلف پہلوؤں پر بھی مبنی ہے۔

پردیسی سائنس (Environmental Science)

تعلق: پردیسی سائنس کوہشیات، کیمیا، زرعیات، اور فضائیات کی شاخوں سے منسلک ہوتی ہے۔ یہ زمینی، جوہری، اور آسمانی تغییرات کا مطالعہ کرتی ہے۔

سوال 2 اوزون کی کمی کی وجوہات اور زندگی پر کے اثرات کا جائزہ لیں۔

وزون کی کمی کا مشکل ایک اہم موضوع ہے جو زندگی اور ماحول کے لئے اہم ہے۔ آئیے دیکھیں کہ اوزون کی کمی کی وجوہات اور اس کے زندگی پر اثرات کیا ہیں

اوزون کی کمی کی وجوہات:

اوزون کشتگی

صنعتی اور زرعی استعمالات میں مختلف زیاں گیسوں کا انبار ہوتا ہے جیسے کہ کلوروفلوروکاربنز (CFCs) اور ہیلوجنیٹڈ آرگینک کمپاؤنڈز۔ یہ گیسیں اوزون کو تباہ کرتی ہیں اور اس کی کمی کا باعث بنتی ہیں۔

سوختوں کی جلن

جیت انجنز، کاروں، اور کھانے کی پکائی میں سوختوں کی جلن بھی اوزون کو تباہ کرنے والے گیسوں پیدا کرتی ہے۔

گرین ہاؤس گیسوں

گرین ہاؤس گیسوں میں میتھین، نائیٹرس آکسائیڈ، اور چھبیاں شامل ہیں جو اوزون کی ترکیب میں متاثر ہوتی ہیں۔

اوزون کی کمی کے اثرات

سورجی کرنسی کی اضافہ

اوزون کی کمی کے باعث مہرہ سے زیادہ سورجی کرنسی زمین تک پہنچتی ہے جو جلوہ و فساد کرتی ہے اور زمینی حرارت میں اضافہ پیدا ہوتا ہے۔

صحت پر اثرات

زیادہ مقدار میں سورجی کرنسی جلوہ و فساد کرتی ہے، جس کی وجہ سے جلدی بھاری دھوپ میں چھپنے سے چھلکے، جلدی جلن، اور آنکھوں کے امراض ہو سکتے ہیں۔

زندگی کے نظاموں پر اثرات

اوزون کی کمی سے زمینی پر ہونے والی مختلف زیاں کاریں بڑھتی ہیں جو بنیادی زندگی کے نظاموں کو متاثر کرتی ہیں، جیسے کہ فولاد کے مصنوعات میں تبدیلی اور غذائی فصلوں میں تبدیلی۔

آب و ہوا کی ترکیب پر اثرات

اوزون کی کمی کے باعث ہوا میں تبدیلیاں ہوتی ہیں جو برف کے گلنے کی شرح میں اضافہ کرتی ہیں اور سمندری سطح میں اضافہ پیدا ہوتا ہے، جو ساحلوں کے لئے خطرہ انگیز ہوتا ہے۔

اوزون کی کمی کو روکنے کیلئے بین الاقوامی سطح پر اہم کام کیا جا رہا ہے، اور مختلف حکومتیں اس مسئلے کے حل کیلئے ہمکاری کر رہی ہیں۔

سوال 3 خلیہ کی ساخت کی وضاحت بذریعہ اشکال کریں۔

خلیہ، زندگی کی بنیادی اکائی ہے، اور اس کی ساخت ایک مداخلت ہوتی ہے جس میں مختلف حصوں کا اجتماع ہوتا ہے. یہاں, میں خلیہ کی اہم حصوں کی وضاحت دیتا ہوں:

سیتوپلاسم (Cytoplasm)

خلیہ کی سب سے بڑی حصہ سیتوپلاسم ہوتا ہے. یہ سیال حصہ ہوتا ہے جس میں مختلف اجزاء میں حرکت ہوتی ہے.

نیوکلیوس (Nucleus)

نیوکلیوس خلیہ کا “دانہ” ہوتا ہے جو خلیہ کی میٹا جینوم کو محفوظ رکھتا ہے. یہاں ہر خلیہ کی جینیاتی معلومات ہوتی ہے جو انتقالی ایجنٹین میں مشغول ہوتی ہے.

میٹاکونڈریا (Mitochondria)

میٹاکونڈریا خلیہ کی “برقی گھڑی” ہوتی ہے جو اکسیجن کو گلوکوز میں بدلتی ہے اور انرجی کو حاصل کرتی ہے.

آہار (Endoplasmic Reticulum)

اس ہسے میں خلیہ کے اندر مختلف اجزاء کو ایک دوسرے تک پہنچانے والے شاخیں ہوتی ہیں. یہ دو قسم کا ہوتا ہے: خلیہ گرانی آہار (Rough Endoplasmic Reticulum) جس پر ربوسومز ہوتے ہیں اور خلیہ آہار (Smooth Endoplasmic Reticulum) جس میں ربوسومز نہیں ہوتے.

گولج (Golgi Apparatus)

گولج وہ جگہ ہے جہاں سے خلیہ کے اندر مختلف اجزاء کو بہر لے جایا جاتا ہے اور انہیں خلیہ کی ضروریات کے مطابق شکل دی جاتی ہے

ربوسومز (Ribosomes)

ربوسومز خلیہ کی پروٹینات بناتے ہیں. یہ آہار پر لگے ہوتے ہیں یا آزاد شکل میں پائے جاتے ہیں

لاپہ (Lysosomes)

لاپے ایسے جزوات کو تشکیل دیتے ہیں جو خلیہ کے لئے ناقابل استعمال ہو گئے ہیں یا خلیہ کے لئے مضر ہو گئے ہیں

ویکیولز (Vacuoles)

ویکیولز خلیہ کی ہلکی اشکال ہوتی ہیں جو اختصاصی عمل میں مدد فراہم کرتی ہیں. گیس، سیال یا ذرات کو بھرنے کے لئے استعمال ہوتی ہیں.

یہ حصے مل کر ایک مکمل خلیہ بناتے ہیں جو مختلف ذرات، مواد، اور اجزاء کو ایک دوسرے سے ملا کر زندگی کی سرگرمیوں کو چلاتا ہے۔

سوال 4 وائرس کا مفہوم ، ساخت اور اہمیت بیان کریں۔

وائرس

مفہوم: وائرس

(Virus) ایک مصغر زندگی ہے جو زندگی کے دوسرے عناصر کے ذریعے زندگی گزارتا ہے۔ یہ چھوٹے ہوتے ہیں اور میکروسکوپی ذرات ہوتے ہیں جنہیں آزادی سے محسوس نہیں کیا جا سکتا۔ وائرس عام طور پر ہوائی راستوں، خوراک، اور مختلف زیوی اور غیر زیوی موادوں کے ذریعے فراہم ہوتے ہیں۔

ساخت: وائرس کا ساخت بہت سادہ ہوتا ہے جبکہ یہ زندگی کے دوسرے عناصر کی طرح خود سرخیوں، خلیوں، یا جسمانی چیزوں کا بنیادی اجزاء نہیں رکھتے۔ وائرس کا اصل جسمانی ساخت چھپا ہوتا ہے اور جب یہ کسی میزبان خلیہ میں داخل ہوتا ہے تو وہ اپنی طرح بنی ہوئی جسمانی مواد کا استعمال کرتا ہے۔

وائرس کا عموماً دو حصوں میں تقسیم کیا جاتا ہے

جینیوم (Genome)

جینوم وائرس کی جسمانی معلومات ہوتی ہے جو اس کو دوسرے خلیہ میں نقل کرنے اور اپنی طرح بنی ہوئی ذرات بنانے کے لئے ضروری ہوتی ہے۔

کیپسول (Capsid): کیپسول وائرس کو چھپا کر رکھتی ہے اور اس کو میزبان خلیہ تک پہنچانے میں مدد فراہم کرتی ہے۔

اہمیت

بیولوجیکل تحقیقات: وائرس کا مطالعہ بیولوجیکل تحقیقات میں اہم ہے۔ یہ علماء کو خلیہ چرخی، جینوم، اور چیزوں کی عملکریں سمجھنے میں مدد فراہم کرتا ہے۔

ٹیکنالوجی کے لئے اہم: وائرسوں کو معمولاً ٹیکنالوجی میں بھی استعمال کیا جاتا ہے، مثال کے طور پر جین ٹھیراپی اور ویکسینیشن کی تشکیل میں وائرسوں کا استعمال ہوتا ہے۔

بیوتکنالوجی: وائرس بیوتکنالوجی کے شعبے میں بھی استعمال ہوتے ہیں، جیسے کہ جین بیان کرنے میں اور جینوم میں ترتیبی تبدیلیوں کا مطالعہ کرنے میں۔

بیماریوں کا تحقیقی ڈیوڑ: وائرسوں کا مطالعہ اور ان کی ساخت کا جاننا مختلف بیماریوں کے علاج کی راہ میں مدد فراہم کرتا ہے۔

جینی انجینئرنگ: وائرسوں کا مطالعہ جینی انجینئرنگ میں بھی اہم ہے، جہاں انہیں چیزوں کی تخلیق میں استعمال کیا جاتا ہے۔

وائرسوں کی اہمیت اور ساخت کے باوجود، ان میں سے بہت سے بے ضرورت ہوتے ہیں جو انسانوں کے لئے مخرب ہوتے ہیں اور بیماریوں کا باعث بنتے ہیں۔

سوال 5- ٹھنڈے خون اور گرم خون والے جانداروں کی خصوصیات اور آپس میں فرق تحریر کریں۔

ٹھنڈے خون اور گرم خون والے جانداروں کی خصوصیات اور آپس میں فرق

ٹھنڈے خون والے جاندار

حرارتی موازنہ

خصوصیات: ٹھنڈے خون والے جانور جو لب گرمی میں رہتے ہیں، ان کا خون درجہ حرارت کم رہتا ہے۔

آپس میں فرق: ٹھنڈے خون والے جانور زیادہ سرد ماحولات میں بہترین طریقے سے سست رہتے ہیں۔

فعالیت کم

خصوصیات: ان جانوروں کی فعالیت زیادہ کم ہوتی ہے، اور وہ زیادہ دیر تک ہیمت نہیں رکھتے۔

آپس میں فرق: ٹھنڈے خون والے جانور زیادہ دیر تک مختلف کامات میں مشغول نہیں رہتے۔

توانائی کی بچت

خصوصیات: ان کی حیاتی عملیات کی رفتار کم ہوتی ہے جس سے انہیں زیادہ توانائی کی ضرورت نہیں ہوتی۔

آپس میں فرق: ٹھنڈے خون والے جانور اپنی توانائی کو بچانے کے لئے کم فعالیتوں پر مبنی ہوتے ہیں۔

گرم خون والے جاندار

حرارتی موازنہ

خصوصیات: گرم خون والے جانوروں کا خون درجہ حرارت میں مستقر رہتا ہے اور ان کی بدن حرارتی موازنہ بنا رہتی ہے۔

آپس میں فرق: انہیں زیادہ حرارتی موازنہ کی ضرورت ہوتی ہے تاکہ وہ مختلف ماحولات میں بھی فعال رہ سکیں۔

فعالیت زیادہ

خصوصیات: گرم خون والے جانور زیادہ دیر تک مختلف کامات میں مشغول رہتے ہیں اور ان کی فعالیت زیادہ ہوتی ہے۔

آپس میں فرق: ان کو زیادہ توانائی کی ضرورت ہوتی ہے تاکہ وہ زیادہ دیر تک مختلف فعالیتوں میں مصروف رہ سکیں۔

توانائی کی ضرورت

خصوصیات: گرم خون والے جانوروں کی حیاتی عملیات کی رفتار زیادہ ہوتی ہے اور انہیں زیادہ توانائی کی ضرورت ہوتی ہے۔

آپس میں فرق: ان کو زیادہ توانائی حاصل کرنے کے لئے زیادہ خوراک کی ضرورت ہوتی ہے تاکہ وہ اپنی فعالیتوں میں مستمر رہ سکیں۔

خون کی حرارت اور جانوروں کی فعالیت میں اس طرح کے فرقات ان کے ماحول اور حیاتی ضروریات پر مبنی ہوتے ہیں۔ گرم خون والے جانور زیادہ دیر تک فعال رہتے ہیں جبکہ ٹھنڈے خون والے جانور مختلف ماحولات میں بہترین طریقے سے سست رہتے ہیں۔

Here is some other assignments solution….

Assignment No 1 Solution Course Code 206

Assignment No 2 Solution Course Code 206

Assignment No 4 Solution Course Code 202

Assignment No 4 Solution Course Code 200

Assignment No 3 Solution Course Code 200

Assignment No 2 Solution Course Code 201

Solved Assignment No 3 Course Code 201

Similar Posts

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *