AIOU: Assignment No 2 Solution Course Code 204

آپ کے خیال میں مکالمہ کس طرح لکھا جانا چاہیے؟ دو شہریوں کے درمیان مکالمہ لکھیں۔

مکالمہ: دو دوستوں کا گفتگو

شہری 1: عمران
شہری 2: فاطمہ

عمران: سلام فاطمہ، تم کیسی ہو؟
فاطمہ: وعلیکم السلام عمران! ہنسی میں ہوں، تم سنائیۺ، کس بات پر ہنس رہے ہو؟
عمران: ہاہا، بلکل! یار، میں سوچ رہا تھا کہ ہمارے شہروں میں زندگی کیسی ہو رہی ہے؟
فاطمہ: ہاں، بالکل! میرے شہر میں تو روزی روٹی چل رہی ہے، لیکن تمہارا کیا ہال ہے؟
عمران: ہمارا بھی حال ٹھیک ہے، مگر یہ برف بہت ہو رہی ہے اور ٹریفک میں تنازع ہو رہا ہے۔
فاطمہ: اہ، یہ ویسا ہی ہے یار! یہاں بھی سردیاں ہیں، لیکن برف نہیں ہے، صرف بریززر میں بارش ہو رہی ہے۔
عمران: ہاں، یہ بات تو ہے، بریززر میں بھی ہر سال بارش کا انتظار رہتا ہے۔
فاطمہ: اور تمہارے شہر میں کیا خبر ہے؟
عمران: یار، ہمارا شہر تھوڑا بڑا ہے، لیکن ہمیں بھی اپنی مختصری زندگی مل رہی ہے۔
فاطمہ: واہ، مزیدار ہے! میرا شہر تو بہت بڑا ہے، ہمیشہ کچھ نیا دیکھنے کو ملتا ہے۔
عمران: ہاں، وہ بات تو ہے، ہمارے یہاں بھی ہر سال کچھ میلے ہوتے ہیں جن میں ہم لوگ بھی شرکت کرتے ہیں۔
فاطمہ: آہا، بہت اچھا ہے! میرے یہاں بھی میلے ہوتے ہیں، ویسے کیسا میلا ہے؟
عمران: بہت مزیدار ہوتا ہے، خصوصاً چھٹیوں میں۔
فاطمہ: یہاں بھی چھٹیاں بہت خوبصورت ہوتی ہیں، برف بریک کا موسم ہوتا ہے، اور لوگ ہلچل میں رہتے ہیں۔
عمران: ہاں، برف کا موسم تو ہمارے یہاں بھی خاص ہوتا ہے، ہر کونے میں بچے بندوقوں کے ساتھ برف کے قلعے بناتے ہیں۔
فاطمہ: واہ، بہت مزیدار ہوتا ہے یقیناً۔ چلو، ایک دن ہم بھی ایک دوسرے کے شہ

بازار میں خریداری کرنے والے دو غیر ملکی باشندوں کے درمیان مکالمہ تحریر کریں نیز مکالمے کی وضاحت بھی کریں۔

مکالمہ: دو غیر ملکی باشندے کی خریداری کرنے والے درمیان

شخص 1: ماریا (اسپین)
شخص 2: جان (جاپان)

ماریا: سلام جان، تم کیسے ہو؟
جان: ہیلو ماریا! میں ٹھیک ہوں، شکریہ۔ تو کیسی ہے؟
ماریا: میں بھی ٹھیک ہوں، شکریہ۔ آپکا دورہ کیسا ہے؟
جان: بہت خوبصورت ہے! میں بازار گئے تھا اور کچھ خریدا رہا ہوں۔
ماریا: واہ، بہت خوشی ہے! ہم بھی یہاں بازار گئے تھے اور خریداری کی تھیں۔
جان: واقعی؟ کیا خریدا؟
ماریا: ہاں، میں نے چائے کے پتے، اسپانش آرٹ، اور ہینڈ میڈ جیوئلری خریدی ہے۔
جان: بہت خوبصورت! مجھے چائے کے پتے بھی پسند ہیں۔
ماریا: ہاں، یہاں کے چائے کے پتے بہت معروف ہیں۔ جاپان میں کیسے ہیں؟
جان: یہاں سب کچھ ٹھیک ہے، جاپان کا ماحول بہت پراموشی ہے اور لوگ یہاں کچھ خاص باتوں کی خریداری کرنے کے لئے آتے ہیں۔
ماریا: واہ، بہت دلچسپ ہے! میں کبھی جاپان نہیں گئی ہوں، لیکن اچھا ہے کہ تم یہاں خوش ہو۔
جان: شکریہ، میں یہاں ہر جگہ کی خریداری پر آیا ہوں اور ہر دفعہ مجھے یہاں کے مصنوعات میں نیاپن ملتا ہے۔
ماریا: ہاں، یہاں بھی مصنوعات میں بہترینی اور خاصیت ہے۔ یہاں کے ہینڈ میڈ جیوئلری بھی بہت مشہور ہے۔
جان: ہاں، یہاں کی ہینڈ میڈ جیوئلری کا اندازہ نہیں لیا جا سکتا، بہت خوبصورت ہے۔
ماریا: اور یہاں کا ہینڈیکرافٹ بھی دیکھنے لائق ہے۔
جان: مجھے یہاں کا ہینڈیکرافٹ بھی بہت پسند ہے، یہاں کا ہر چیز بہت معیاری ہوتی ہے۔
ماریا: ہاں، یہاں کا م

احول اور مصنوعات ہر دلچسپی رکھتی ہیں۔
جان: ہاں، مجھے بہت مزیدار لگا ہے، یہاں کی خریداری میری یادگار بن گئی ہے۔
ماریا: بہت خوش آئیں ہو، جان۔ اگلے بار میں جاپان آؤں گی تو ہمیں بھی بتائیں گے۔
جان: بالطبع، یہاں کا خوش آمدید کہتا ہوں۔
ماریا: شکریہ، بائی بائی!
جان: بائی بائی

ملک کے شادی بیاہ کی رسم و رواج پر شہریوں کے درمیان مکالمہ تحریر کریں۔

مکالمہ: شادی بیاہ کی رسم و رواج پر شہریوں کے درمیان

شہری 1: عادل (لاہور)
شہری 2: سمینا (کراچی)

عادل: سلام سمینا، تم کیسی ہو؟
سمینا: وعلیکم السلام عادل، میں بھی ٹھیک ہوں، شکریہ۔ تم کیسے ہو؟
عادل: ہاں، الحمدللہ، میں بھی ٹھیک ہوں۔ تونے سنا ہے ہمارے ملک میں شادی بیاہ کے رسم و رواج کے بارے میں؟
سمینا: ہاں، میں نے سنا ہے کہ یہاں شادی بیاہ کا رسم بہت خاص ہوتا ہے۔ تم بھی شادی بیاہ کی رسموں کے بارے میں بتاؤ گے؟
عادل: بلال، زندہہ، یہاں شادی بیاہ کا رسم و رواج بہت مقدس اور خاص ہوتا ہے۔ شادیوں کی تیاریاں مہینوں پہلے ہی شروع ہوجاتی ہیں اور یہاں لوگوں کے لئے بہت اہم ہوتی ہیں۔
سمینا: واہ، بہت دلچسپ ہے! کیسی تیاریاں ہوتی ہیں؟
عادل: شادی کی تیاریاں میں خاندان بھر میں مددگاروں کو شامل کیا جاتا ہے۔ لڑکے والے اور لڑکی والے دونوں ہی اپنے ہمسایہ اور دوستوں کو مدد فراہم کرتے ہیں۔
سمینا: یہ تو اچھا ہے، یہاں کسی ایک خاص مقام پر ہوتی ہے یا گھر پر؟
عادل: ہاں، شادی عام طور پر گھر میں ہوتی ہے، لیکن کچھ لوگ ہوٹل یا شادی گاہوں میں بھی منظم کرتے ہیں۔
سمینا: اور کیسا ہوتا ہے بارات؟
عادل: بارات میں لڑکا اپنے گھر سے نکل کر، لڑکی کے گھر جاتا ہے اور یہاں لوگ بہت شور شرابہ کرتے ہیں۔ بہت مزیدار ہوتا ہے!
سمینا: بہت اچھا ہوتا ہوگا! اور شادیوں میں کونسی خصوصیات ملتی ہیں؟
عادل: شادیوں میں میٹھائیں، بھروسہ اور خوشی کا ماحول ہوتا ہے۔ لوگ مختلف تقریبات، رسموں اور آداب کے ساتھ اپنی خوشی کا اظہار کرتے ہیں۔
سمینا: شادیوں میں خوبصورتی ہے۔ شکریہ عادل، یہ باتیں سن کر بہت خوشی ہوئی
عادل: خواہش ہے کہ تم بھی ایک دن ہمارے شہر لہور کی شادیوں کا ماحول دیکھو۔
سمینا: بیشک، میں بھی چاہتی ہوں کہ کبھی لہور آؤں اور یہاں کے خوبصورت رسموں کا حصہ بنوں۔
عادل: اچھا ہے، ہم انتظار کریں گے

دوکان دار اور گاہک کے درمیان مکالمہ لکھیں

مکالمہ: دوکان دار اور گاہک کے درمیان

دوکان دار: عمر (دکاندار)
گاہک: سارا (خریدار)

عمر: السلام علیکم! خوش آمدید ہے، سارا
سارا: وعلیکم السلام! شکریہ، عمر! تم کیسے ہو؟
عمر: الحمدللہ، ٹھیک ہوں! خریداری کے لئے کچھ خاص چیزیں چاہیے ہوئیں؟
سارا: ہاں، میں نے سنا ہے کہ یہاں کی ملبوسات بہت اچھی ہوتی ہیں۔ میں نے سوچا تھا کہ کچھ نیا لے لوں۔
عمر: بلال، آپ ہماری ملبوسات میں دلچسپی رکھتے ہیں۔ یہاں نیا موسمی کالیکشن بھی آیا ہوا ہے، آپ اسے دیکھیں گی؟
سارا: بالطبع، مجھے دیکھنا ہے! ویسے تمہاری دوکان کا ماحول بہت خوبصورت ہوتا ہے۔
عمر: شکریہ، سارا! ہم یہاں گاہکوں کو خوبصورت اور معیاری ملبوسات فراہم کرنے کے لئے محنت کرتے ہیں۔
سارا: بہت اچھا ہے! یہاں شعبے کی تبدیلی کا سماں ہو رہا ہے، کیا نیا ہے؟
عمر: ہاں، ہم نے اخیراً اپنی آن لائن دکان بھی شروع کی ہے، جس سے گاہکوں کو آسانی سے ملبوسات حاصل ہوتی ہیں۔
سارا: یہ بھی اچھا ہے، میں کبھی اسے چیک کروں گی! تمہاری دوکان میں گاہکوں کو کن سے فوائد ہوتے ہیں؟
عمر: ہم گاہکوں کو معیاری ملبوسات، معقول قیمتوں اور خوبصورت خدمت فراہم کرنے کا جواز دیتے ہیں۔ ہمیشہ ان کی راۓ سنتے ہیں اور اپنی ملبوسات کو ان کی ترجیحات کے مطابق بناتے ہیں۔
سارا: بہت اچھا! میرے خیال میں دوکانوں اور گاہکوں کے درمیان اچھی تعلقات ہونا بہت ضروری ہے۔
عمر: بالکل، یہ تعلقات ہمیں ہمیشہ اپنے گاہکوں کے ساتھ مضبوطی اور بڑھنے کا مواقع فراہم کرتے ہیں۔
سارا: شکریہ، عمر! میں اب ملبوسات دیکھنے چلیں گی۔
عمر: براہ کرم! مجھ سے کچھ چاہیے ہو تو مجہ سے رابطہ کرنا، شکریہ
سارا: بیشک، خدا حافظ

ٹیلی فونک مکالمہ سے کیا مراد ہے؟ دو طلبا کے درمیان ٹیلی فون پر مکالمہ لکھیں ۔

ٹیلی فونک مکالمہ: طلبا کے درمیان

آصف
صالح

آصف: السلام علیکم، صالح! تونے ہفتہ کی تعلیمات کیسی کی ہیں؟
صالح: وعلیکم السلام، آصف! ہفتہ کافی مشغول تھا، لیکن ٹیچرز نے نئے چیلنجز دیے ہیں۔
آصف: واہ، کچھ خاص؟
صالح: ہاں، ہمیں ایک تیم ورک پروجیکٹ دینا ہے، اور ہمیں ایک دوسرے کے ساتھ مشورے کرنا ہے تاکہ ہم ایک مثبت حل تیار کر سکیں۔
آصف: یہ کام تو دلچسپ لگتا ہے! تم کس موضوع پر کام کر رہے ہو؟
صالح: ہمیں انقلابی فناں “ٹیلی فونک مکالمہ” پر کرنا ہے، جس میں ہمیں ایک دوسرے کو خریداری کرنے کے مختلف طریقوں پر مشورے کرنا ہے۔
آصف: واہ، مجھے بھی اس کا خیال آچھا لگتا ہے۔ تم کس طرح کے افراز و نزولات پر غور کر رہے ہو؟
صالح: ہاں، ہمیں صارفین کی ترجیحات، مقامات، اور عمر کو مد نظر رکھتے ہوئے ایک بہترین “ٹیلی فونک مکالمہ” تیار کرنا ہے۔
آصف: یہ تو چیلنجنگ کام لگتا ہے، لیکن مزیدار بھی ہوتا ہے۔
صالح: بلکل، یہ ہمیں نئی چیزوں کو سمجھنے اور سیکھنے کا موقع دیتا ہے۔
آصف: میرا خیال ہے کہ تم ایک بہترین “ٹیلی فونک مکالمہ” پیدا کر سکو گے۔
صالح: شکریہ، آصف! اور تو کسی نئے مسائل سے کس طرح نکل رہا ہے؟
آصف: میری بھی ایک پروجیکٹ ہے جس میں ہمیں مختلف مصنوعات کے فروخت کے اہلکاروں سے ملاقات کرنی ہے۔ میری مشورہ حاصل کرنے میں مدد کریں گے؟
صالح: بالطبع، آصف! میں بھی تمہاری پروجیکٹ میں مدد کرنے کے لئے دستیاب ہوں۔
آصف: شکریہ، صالح! مجھ سے بعد میں بات چیت کرتا ہوں، ٹیم ورک کا وقت ہے۔
صالح: بالطبع، بائے بائے!

Here is some other assignments solution….

Assignment No 1 Solution Course Code 220

Assignment No 1 Solution Course Code 313

Assignment No 1 Solution Course Code 219

Assignment No 2 Solution Course Code 219

Assignment No 1 Solution Course Code 217

Assignment No 2 Solution Course Code 217

Similar Posts

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *