AIOU: Assignment No 2 Solution Course Code 209

خوراک کی گروہ بندی کیسے کی جاتی ہے مختصر الکھیں۔

خوراک کی گروہ بندی:

خوراک کو مختلف گروہوں میں تقسیم کیا جا سکتا ہے جس سے ہر گروہ ایک مخصوص قسم کی نیازوں کو پورا کرتا ہے۔ یہاں خوراک کی گروہ بندی کی مختصر الکھا گئی ہے:

پروٹین

پروٹینات ہیں جو مصرف ہوتے ہیں۔ یہ جسم کی ساخت اور مرمت کے لئے ضروری ہوتے ہیں۔ میٹ، چکن، مچھلی، دالیں، انڈے، دودھ، اور چیز وغیرہ پروٹینات کا مواسمی خزانہ فراہم کرتے ہیں۔

کاربوہائیڈریٹس

کاربوہائیڈریٹس ہیں جو اینرجی کے اہم مصداق ہیں۔ چاول، روٹی، آٹا، چینی، گندم، اور سبزیاں کاربوہائیڈریٹس کا مصداق ہیں۔

فٹ

فٹ جسم کو اینرجی مہیا کرتا ہے اور مصرف ہونے والا فٹ صحت کے لئے ضروری ہوتا ہے۔ مکھن، تیل، ماہی، اخروٹ، اور چیز فٹ کا مواسمی خزانہ ہیں۔

وٹامنز اور معدنیات

وٹامنز اور معدنیات صحت کے لئے لازمی ہیں۔ میوے، سبزیاں، اور میٹ کی خوراک سے انہیں حاصل کیا جا سکتا ہے۔

چینی اور پانی

چائے، قہوہ، اور پانی جسم کے لئے ہدایت ہوتے ہیں اور جسم کو ہیڈریٹ رکھنے میں مدد فراہم کرتے ہیں۔

گرمیں اور فالجیں

گرمیں اور فالجیں جسم کو گرم رکھتی ہیں اور موسمی بیماریوں سے محافظت کرتی ہیں۔ گرمیں میں چاول، دالیں، اور گرم مصالحے شامل ہیں جبکہ فالجیں میں سبزیاں اور پھل شامل ہیں۔

فالوں

فالوں یا تیزابیں معدنیاتی اور صحت کے لئے ضروری ہیں۔ مصرف ہونے والے فالوں میں نمک، کالی مرچ، لہسن، ادرک وغیرہ شامل ہیں۔

خضروں اور پھلوں

خضروں اور پھلوں میں وٹامنز، معدنیات، اور اینٹی آکسیڈنٹس پایا جاتا ہے جو جسم کے لئے مفید ہوتے ہیں۔

یہ گروہ بندی خوراک کے اہم اجزاء کو مد نظر رکھتی ہے اور صحتمند زندگی گزارنے میں مدد فراہم کرتی ہے۔

لحمیات حاصل کرنے کے ذرائع کیا ہیں؟

لحمیات یعنی پروٹینات حاصل کرنے کے لئے مختلف ذرائع موجود ہیں۔ پروٹینات جسم کے لئے اہم ہیں، چونکہ یہ عضلات، ہڈیاں، اعضاء اور دیگر اندرونی عملی اعضاء کی تشکیل میں مدد فراہم کرتے ہیں۔ یہاں کچھ اہم لحمیات حاصل کرنے کے ذرائع ہیں:

گائے کا گوشت: گائے کا گوشت ایک معمولی اور مضبوط پروٹین کا ذریعہ ہے۔ گائے کا گوشت عام طور پر لحم ہوتا ہے جو بھائیں، بکرے، اور گائے سے حاصل ہوتا ہے۔

مرغی کا گوشت: مرغی کا گوشت بھی ایک ممتاز پروٹین کا ذریعہ ہے اور یہ کم چربی بھی ہوتا ہے۔

مچھلی: مچھلی بھی ایک عالی پروٹینات کا ذریعہ ہے اور اس میں اومیگا-3 فیٹی ایسڈز بھی پائے جاتے ہیں جو دل کی صحت کے لئے مفید ہیں۔

دالیں اور پلزے: دالیں اور پلزے جیسے چنے اور لوبیا بھی پروٹینات کا اچھا ذریعہ ہیں۔

انڈے: انڈے بھی ایک معمولی پروٹینات کا ذریعہ ہیں اور ان میں بھی مختلف عناصر موجود ہوتے ہیں جو صحت کے لئے مفید ہیں۔

سویا پروٹین: سویا پروٹین، جوکہ سویا دانے سے حاصل ہوتا ہے، ایک مستقل پروٹین کا ذریعہ ہے اور یہاں تک کہ یہ گائے کے گوشت کے مقابلے میں صحت کے لئے بھی بہترین مانا جاتا ہے۔

نٹس اور بیج: نٹس اور بیج بھی پروٹین کا اچھا ذریعہ ہیں، جیسے کہ بادام، کاجو، پستہ، چیا بیج، اور کالا چنا۔

دودھ اور ڈیری پراڈکٹس: دودھ اور اس سے بنی چیزیں جیسے کہ چیز، دہی، اور پینیر بھی اچھے پروٹینات کا ذریعہ ہیں۔

یہ ذرائع ایک متنوع اور متعدد غذائیت کا مختار ہیں اور اچھی صحت کے لئے مختلف پروٹینات فراہم کرتے ہیں۔ شہری یا دیہاتی علاقے، ہر جگہ پروٹینات حاصل کرنے کے لئے مختلف اہللہ ہوتی ہیں۔

گوشت کو محفوظ کرنے کا طریقہ لکھیں۔ کا طریقہ ہیں۔

گوشت کو محفوظ رکھنے کے لئے درست طریقے اہم ہیں تاکہ اس کا ذائقہ اور صحت دونوں برقرار رہیں۔ یہاں کچھ اہم نکات ہیں جو گوشت کو محفوظ رکھنے میں مدد فراہم کرتی ہیں

تازگی کا چیک: گوشت خریدتے وقت اس کی تازگی کا خصوصی خیال رکھیں۔ گوشت کا رنگ چمکدار ہونا چاہئے اور اس پر کسی قسم کی بدبو نہیں ہونی چاہئے۔

ٹھنڈی جگہ پر رکھیں: خریدا ہوا گوشت فوراً ٹھنڈی جگہ پر رکھیں۔ اگر آپ گوشت کو فوراً استعمال نہیں کر رہے، تو اسے ٹھنڈے فریج میں یا ٹھنڈے برفیخ میں رکھیں۔

چیکن اور مٹن الگ رکھیں: چیکن اور مٹن کو الگ الگ چمچے یا چٹنیوں میں رکھیں تاکہ ان کی بو نہیں ملے۔

تازہ کریک پر رکھیں: گوشت کو تازہ کریک پر رکھیں تاکہ اس سے ہواوں کا ہنر محفوظ رہے اور گوشت تازہ رہے۔

علیحدہ چوبیں: گوشت کو علیحدہ چوبیں میں رکھیں تاکہ ایک دوسرے کے ساتھ جما رہے اور بری بو انہیں متاثر نہ کرے۔

فوراً پکائیں یا فریز کریں: گوشت کو فوراً پکا دیں یا فریز کریں۔ گوشت کو لمبی مدت تک فریز کرنے کے لئے ٹائمپریچر مناسب ہوتی ہے۔

نہانے سے پہلے گوشت نہ دھویں: گوشت کو نہانے سے پہلے نہیں دھوئیں، چونکہ گوشت کو پانی سے چھوڑنا بیکٹیریاوں کی نمو کو بڑھا سکتا ہے۔

بار بار فریز-پگھلائیں نہ کریں: گوشت کو بار بار فریز اور پگھلایا جانا بیشمار بار بار نہ کریں، کیونکہ یہ گوشت کی مختصر ہوتی ہے اور اس کی کیفیت متاثر ہوتی ہے۔

پروٹین سیل: گوشت کو محفوظ رکھنے کے لئے پروٹین سیل استعمال کریں تاکہ ہوا، بخار، اور بدبو گزرنے سے بچا جا سکے۔

استعمال کی تاریخ: گوشت کو خوراکیں بنانے سے پہلے اس کی تاریخ کو چیک کریں اور اگر وہ معین شدہ وقت سے زیادہ ہو گئی ہے تو استعمال نہ کریں۔

یہ ہی تدابیر گوشت کو محفوظ رکھنے کے لئے اہم ہیں اور یہ آپ کو بیماریوں سے بچانے میں مدد فراہم کرتی ہیں۔

گوداموں میں فصل کو نقصان پہنچانے والے کیڑے کون سے ہیں صرف نام لکھیں۔

گوداموں میں فصل کو نقصان پہنچانے والے کچھ اہم کیڑے درج ذیل ہوتے ہیں:

خنفسہ (Weevil)

سورج مکھی (Sunflower Seed Beetle)

سانپ چھپکلی (Snakefly)

چھوٹا کچھوترا (Tiny Grasshopper)

کچھواکچھوڑی (Cutworm)

ٹوٹا (Bollworm)

ٹارنٹولا گھونگا (Tarantula Hawk)

کھپالی چھلیا (Spider Mite)

سفید کچھوا (Whitefly)

چھوٹی چٹائیاں (Aphids)

یہ کچھ کیڑے ہیں جو گوداموں میں رکھی ہوئی فصلوں کو نقصان پہنچا سکتے ہیں اور ان کا پیدا ہونا فصلوں کے لئے خطرہ انگیز ہوتا ہے۔

متوازن اور غیر متوازن غذا میں فرق بیان کریں۔

متوازن غذا

متوازن غذا وہ غذائیں ہوتی ہیں جو ایک شخص کو تمام ضروری مصرفات فراہم کرتی ہیں تاکہ وہ صحتمند اور مستقر زندگی گزار سکے۔ ایسی غذائیں شامل ہوتی ہیں جو ہر قسم کی ضروریات مثل پروٹین، کاربوہائیڈریٹس، فٹ، وٹامنز، اور معدنیات فراہم کرتی ہیں۔ مثال کے طور پر، چارہ، دالیں، میٹ، سبزیاں، اور پھل متوازن غذا کی مثالیں ہیں۔

غیر متوازن غذا

غیر متوازن غذا وہ ہے جس میں غذائیں ایک ہی قسم کی مصرفات پر مبنی ہوتی ہیں اور دوسری ضروریات نظرانداز ہوتی ہیں۔ مثلاً، اگر کسی شخص کا خوراک زیادہ میٹ پر مبنی ہو اور اس میں کم سبزیاں یا پھل ہوں، تو یہ غیر متوازن غذا ہوتا ہے۔ اس طرح کی غذائیں عرقی امراض اور غیرہ کا باعث بن سکتی ہیں۔

غیر متوازن غذا کے نقائص

پروٹین کی کمی: زیادہ تعداد میں میٹ یا دال کی استعمال سے دیگر غذائیں نظر انداز ہوتی ہیں جس سے پروٹین کی کمی ہوتی ہے۔

کاربوہائیڈریٹس کی کمی: زیادہ تعداد میں میٹ اور فٹ پر مبنی خوراک سے کاربوہائیڈریٹس کی کمی ہوتی ہے جس سے اینرجی کی کمی کا شکار ہوتا ہے۔

فٹ کی زیادہی: اگر غذا میں زیادہ مقدار میں چربیاں ہوں تو یہ صحت کے لحاظ سے مضر ہوتا ہے اور چولیسٹرول بڑھ سکتا ہے۔

وٹامنز اور معدنیات کی کمی: صرف مخصوص غذائیں استعمال کرنے سے وٹامنز اور معدنیات کی کمی ہوتی ہے جس سے صحتمندی میں خلل پیدا ہوتا ہے۔

مندرجہ ذیل سوالات کے مفصل جوابات لکھیں۔ ہر سوال کے دس نمبر ہیں۔

غذا کے فوائد اور اسے حاصل کرنے کے ذرائع تحریر کریں۔

غذا کے فوائد

غذا ہماری صحت کے لئے مختلف طریقوں سے فائدہ مند ہے۔ یہ ہمیں صحتمند رہنے کے لئے لازمی مصرفات فراہم کرتا ہے اور جسم کو مختلف عملوں کے لئے اہم عناصر فراہم کرتا ہے۔ یہاں غذا کے فوائد کچھ ہیں:

صحتمند جسم

متوازن غذا سے حاصل ہونے والے پروٹین، کاربوہائیڈریٹس، فٹ، وٹامنز، اور معدنیات جسم کو صحتمند رکھتے ہیں۔

اور توازن

مختلف غذائیں اور اجزاء کا استعمال توازنی طور پر ہونا چاہئے تاکہ جسم کو ہر قسم کی ضروریات فراہم ہوں۔

توانائی فراہم کرنا

کاربوہائیڈریٹس جسم کو اینرجی فراہم کرتے ہیں جو روزمرہ کی چیزوں کو کرنے کے لئے ضروری ہوتی ہے۔

صحتمند دل

صحتمند غذا خوراک سے دل کی صحت میں بہتری آتی ہے اور چینل سستی ہوتی ہے۔

بڑھتی ہوئی مزاجیت

وٹامنز اور معدنیات سے بھرپور غذا خوراک سے مزاج میں بہتری آتی ہے اور دباؤ کم ہوتا ہے۔

مضبوط عظام اور دانت

کیلشیم اور وٹامن ڈی کی موجودگی سے عظام اور دانت مضبوط رہتے ہیں۔

غذا حاصل کرنے کے ذرائع

سبزیاں اور پھل

مختلف قسم کی سبزیاں اور پھل غذا کا اہم حصہ ہیں۔

میٹ، مچھلی اور دالیں

پروٹینات کیلئے میٹ، مچھلی اور دالیں اہم ہیں۔

چاول اور روٹی

کاربوہائیڈریٹس کیلئے چاول اور روٹی شامل کرنا ضروری ہے۔

دودھ اور چیز

کیلشیم اور وٹامن ڈی کے لئے دودھ اور چیز شامل کرنا فائدہ مند ہے۔

میوہ دار پانی

ہر روز میوہ دار پانی پینا صحت کے لحاظ سے بہتری فراہم کرتا ہے۔

میوہ ورزش

میوہ کھانا اور روزانہ ورزش کرنا جسم کو صحتمند رکھنے کیلئے مددگار ہوتا ہے۔

غذا حاصل کرنے کے یہ ذرائع ہمیں مختلف قسم کی ضروریات کو پورا کرنے میں مدد فراہم کرتے ہیں اور صحتمند زندگی گزارنے کا ذریعہ بنتے ہیں۔

غذائی اجزا کون کون سے ہیں نیز جسم میں ان کے افعال تحریر کریں۔

غذائی اجزاء جسم کو صحتمند رہنے اور صحیح طور پر کام کرنے کے لئے ضروری ہیں۔ یہ مختلف اجزاء شامل کرتے ہیں جو جسم کی تربیت، تعمیرات، اور عملکرد میں مدد فراہم کرتے ہیں۔

پروٹین

افعال: عضلات، ہڈیاں، اعضاء، اور ہموگلوبن بنانے میں مدد کرتا ہے۔

موادغذائی منبع: گوشت، مچھلی، دالیں، انڈے، دودھ اور ڈیری پراڈکٹس، سویا، نٹس، اور بیج۔

کاربوہائیڈریٹس

افعال: انرجی فراہم کرتے ہیں جو جسم کو حرکت کے لئے ضروری ہے۔

موادغذائی منبع: روٹی، چاول، دالیں، فلز، سبزیاں، اور پھل۔

. چربیاں

افعال: انرجی کا ذخیرہ کرتی ہیں اور عضلات کو حفاظت فراہم کرتی ہیں۔

موادغذائی منبع: مکھن، تیل، چیز، مکھنملائی دودھ، مچھلی، دry fruits، اور بیج۔

وٹامنز

افعال: جسم کے مختلف حصوں کی صحت کے لئے ضروری ہیں، مثلاً بصورت عامی تناسلیں۔

موادغذائی منبع: سبزیاں، پھل، دودھ اور ڈیری پراڈکٹس، گوشت، مچھلی، اور مختلف دانے۔

معدنیات

افعال: ہڈیاں مضبوط کرنا، دانتوں کو مضبوط کرنا، اور دماغی فعل میں مدد کرنا۔

موادغذائی منبع: دودھ اور ڈیری پراڈکٹس، مچھلی، گوشت، پھل، سبزیاں، اور مختلف دانے۔

پانی

افعال: جسم کی ہر قسم کی فعالیتوں میں شرکت کرتا ہے اور جسم کی ہر سیل کے لئے ضروری ہے۔

موادغذائی منبع: پانی، پھلوں اور سبزیوں میں موجود ہے۔

فائبر

افعال: چولہے چلانے، چولہے باز کرنے، اور ہضمی نظام کو بہتر بنانے میں مدد فراہم کرتا ہے۔

موادغذائی منبع: سبزیاں، پھل، چاول، دالیں، اور پھلیوں کے چھلکے۔

غذائی اجزاء کا موزوں مجموعہ صحتمند زندگی کے لئے ضروری ہے۔ ایک صحتمند خوراکی ریچ دائیت میں مختلف غذائی اجزاء کو متناسب طور پر شامل کرنا اہم ہوتا ہے۔

کیا مختلف پیشے، عمر اور جنس کے اعتبار سے لوگوں کی غذائی ضروریات ایک جیسی ہوتی ہیں؟ جواب کی وضاحت مثالوں سے کیجیے۔

مختلف پیشے، عمر، اور جنس کے اعتبار سے لوگوں کی غذائی ضروریات مختلف ہوتی ہیں۔ ہر شخص کا جسم مختلف ہوتا ہے اور اس کی صحت، فعالیت، اور ضروریات بھی مختلف ہوتی ہیں۔ یہاں مثالوں کے ذریعے اس بات کو وضاحت دیتا ہوں:

مختلف پیشے

ماہرین صحت

ایک ڈاکٹر یا نرس کی غذائی ضروریات میں زیادہ پروٹین اور وٹامنز شامل ہوتی ہیں تاکہ وہ لمحوں میں تھکاوٹ کا سامنا کر سکیں اور اچھی صحت برقرار رکھ سکیں۔

فنیشن

ایک فنیشن یا مشینکی کے لئے زیادہ تعداد میں کاربوہائیڈریٹس اور اینرجی فراہم کرنا ضروری ہوتا ہے تاکہ وہ دنیاگیر کام کر سکیں۔

مختلف عمر

بچے

بچوں کی غذائی ضروریات میں پروٹین، کیلشیم، اور وٹامنز کی زیادہ مقدار ہوتی ہے تاکہ ان کی صحتمندی اور جسمانی نشوونما میں بہتری آئے۔

بوڑھے لوگ

بوڑھے لوگوں کی غذائی ضروریات میں کم پروٹین اور زیادہ کیلشیم شامل ہوتی ہیں تاکہ ہڈیوں کی مضبوطیت برقرار رہے اور موچ میں کمی نہ ہو۔

مختلف جنس

عورتوں

عورتوں کی غذائی ضروریات میں زیادہ آئرن اور فولیک ایسڈ کی مقدار ہوتی ہے جو خون کی کمی کو پورا کرتی ہے اور حمل کے دوران اہم ہوتی ہے۔

مردوں

مردوں کی غذائی ضروریات میں زیادہ پروٹین اور وٹامن D کی مقدار ہوتی ہے جو عضلات کی مضبوطیت اور ہڈیوں کی مضبوطیت کے لئے مددگار ہوتی ہے۔

یہ مثالیں دکھاتی ہیں کہ مختلف عواملوں کے لحاظ سے لوگوں کی غذائی ضروریات مختلف ہوتی ہیں اور انہیں تشخیص کرتے ہوئے ایک صحیح اور متناسب بجٹ بنایا جا سکتا ہے۔

غذا کی بنیادی تیاری اور پکانے کے غلط طریقے کس طرح غذائی اجزا کو ضائع کرتے ہیں؟ جواب مفصل لکھیں۔

مختلف پیشے، عمر، اور جنس کے اعتبار سے لوگوں کی غذائی ضروریات مختلف ہوتی ہیں۔ ہر شخص کا جسم مختلف ہوتا ہے اور اس کی صحت، فعالیت، اور ضروریات بھی مختلف ہوتی ہیں۔ یہاں مثالوں کے ذریعے اس بات کو وضاحت دیتا ہوں:

مختلف پیشے

ماہرین صحت

ایک ڈاکٹر یا نرس کی غذائی ضروریات میں زیادہ پروٹین اور وٹامنز شامل ہوتی ہیں تاکہ وہ لمحوں میں تھکاوٹ کا سامنا کر سکیں اور اچھی صحت برقرار رکھ سکیں۔

فنیشنز

ایک فنیشن یا مشینکی کے لئے زیادہ تعداد میں کاربوہائیڈریٹس اور اینرجی فراہم کرنا ضروری ہوتا ہے تاکہ وہ دنیاگیر کام کر سکیں۔

مختلف عمر

بچے

بچوں کی غذائی ضروریات میں پروٹین، کیلشیم، اور وٹامنز کی زیادہ مقدار ہوتی ہے تاکہ ان کی صحتمندی اور جسمانی نشوونما میں بہتری آئے۔

بوڑھے لوگ

بوڑھے لوگوں کی غذائی ضروریات میں کم پروٹین اور زیادہ کیلشیم شامل ہوتی ہیں تاکہ ہڈیوں کی مضبوطیت برقرار رہے اور موچ میں کمی نہ ہو۔

مختلف جنس

عورتوں

عورتوں کی غذائی ضروریات میں زیادہ آئرن اور فولیک ایسڈ کی مقدار ہوتی ہے جو خون کی کمی کو پورا کرتی ہے اور حمل کے دوران اہم ہوتی ہے۔

مردوں

مردوں کی غذائی ضروریات میں زیادہ پروٹین اور وٹامن D کی مقدار ہوتی ہے جو عضلات کی مضبوطیت اور ہڈیوں کی مضبوطیت کے لئے مددگار ہوتی ہے۔

یہ مثالیں دکھاتی ہیں کہ مختلف عواملوں کے لحاظ سے لوگوں کی غذائی ضروریات مختلف ہوتی ہیں اور انہیں تشخیص کرتے ہوئے ایک صحیح اور متناسب بجٹ بنایا جا سکتا ہے۔

غذائیت سے کیا مراد ہے نیز غذا کے فائدے اور حاصل کرنے کے ذرائع تحریر کریں۔

غذائیت: غذائیت وہ خصوصیت ہے جو کسی غذائی چیز میں موجود عناصر اور مرکبات کو ظاہر کرتی ہے جو جسم کو صحتمند رکھنے کے لئے ضروری ہوتی ہے۔ ایک غذائی چیز کی غذائیت اس میں موجود پروٹین، کاربوہائیڈریٹس، فٹ، وٹامنز، اور معدنیات وغیرہ کی مقدار پر مبنی ہوتی ہے۔

غذا کے فائدے: غذا کے فراہم کردہ عناصر اور مرکبات جسم کے صحت کے لئے بہترین حالت میں رہنے میں مدد فراہم کرتی ہیں۔ یہاں کچھ غذا کے فائدے ہیں:

صحتمند جسم

صحتمند غذا خوراک سے جسم میں ضروری عناصر کا موزوں تناصب ہوتا ہے جو صحتمند جسم کی بناوٹ کے لئے ضروری ہے۔

توانائی فراہمی

کاربوہائیڈریٹس جسم کو توانائی فراہم کرتے ہیں جو روزمرہ کی چیزوں کو کرنے کے لئے ضروری ہوتی ہے۔

مضبوط عظام اور دانت

کیلشیم اور وٹامن ڈی کی موجودگی سے عظام اور دانت مضبوط رہتے ہیں۔

صحتمند دل

صحتمند غذا خوراک سے دل کی صحت میں بہتری آتی ہے اور چینل سستی ہوتی ہے۔

مزاج میں بہتری

وٹامنز اور معدنیات سے بھرپور غذا خوراک سے مزاج میں بہتری آتی ہے اور دباؤ کم ہوتا ہے۔

غذا حاصل کرنے کے ذرائع: غذا حاصل کرنے کے لئے مختلف ذرائع شامل ہیں، جو درج ذیل ہوتے ہیں

سبزیاں اور پھل

مختلف قسم کی سبزیاں اور پھل غذائیت بھرپور خوراک فراہم کرتے ہیں۔

میٹ، مچھلی اور دالیں

پروٹینات کیلئے میٹ، مچھلی اور دالیں اہم ہیں۔

چاول اور روٹی

کاربوہائیڈریٹس کیلئے چاول اور روٹی شامل کرنا ضروری ہے۔

دودھ اور چیز

کیلشیم اور وٹامن ڈی کے لئے دودھ اور چیز شامل کرنا فائدہ مند ہے۔

میوہ دار پانی

ہر روز میوہ دار پانی پینا صحت کے لحاظ سے بہتری فراہم کرتا ہے۔

میوہ ورزش

میوہ کھانا اور روزانہ ورزش کرنا جسم کو مضبوط رکھنے کے لئے مددگار ہوتا ہے۔

غذائیت سے مراد صحتمند جسم اور ذہانت بڑھانے کے لئے مختلف عناصر اور مرکبات کا موزوں تناصب ہے۔

پھلوں اور سبزیوں کو لمبے عرصے تک کن طریقوں سے ذخیرہ کیا جا سکتا ہے؟

پھلوں اور سبزیوں کو لمبے عرصے تک ذخیرہ کرنے کے لئے مختلف طریقے موجود ہیں جو ان کی تازگی اور غذائیت کو برقرار رکھتے ہیں۔ یہاں کچھ طریقے ہیں:

ٹھنڈے محفوظ درجے

زیادہ تر پھل اور سبزیاں ٹھنڈے درجے پر زندگی کو زیادہ عرصے تک برقرار رکھتی ہیں۔ ٹھنڈے درجے میں انہیں رکھنا اور یخنی یا ٹھنڈے پانی سے نم کر کے یہ طریقہ بہترین ہوتا ہے۔

سرد یا ہوائی ہرارت میں رکھنا

خصوصاً گھر کے ہوائی میں رکھنا یا سرد یا ہوائی ہرارت میں ذخیرہ کرنا بھی موزوں ہوتا ہے۔

تنہا یا الگ رکھنا

ہر قسم کے پھلوں اور سبزیوں کو الگ الگ یا تنہا ہر کھانے کے لئے رکھنا زیادہ بہتر ہوتا ہے تاکہ ان کی بو خود فریش رہے۔

برف یا ٹھنڈا پانی استعمال کرنا

پھلوں اور سبزیوں کو ذخیرہ کرتے وقت برف یا ٹھنڈا پانی استعمال کرنا ان کی زندگی کو بڑھا دیتا ہے۔

تخزینی ڈبے استعمال کرنا

تخزینی ڈبے یا تھیلا جو زیپ بیگ یا پلاسٹک کی بوتلوں میں بن سکتا ہے، انہیں ٹھنڈے محفوظ درجے میں رکھنا بھی زیادہ عرصے تک تازگی برقرار رکھتا ہے۔

ٹھنڈے میں سیلف یا فریج میں رکھنا

ٹھنڈے میں رکھنا یا فریج میں ذخیرہ کرنا بھی ایک مفید طریقہ ہے جو غذائیت کو بڑھا دیتا ہے۔

یہ طریقے اس بات کو یقینی بناتے ہیں کہ پھلوں اور سبزیوں کی تازگی اور غذائیت بڑی مدت تک برقرار رہے۔

Similar Posts

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *