Assignment No 1 Solution Course Code 212

ٹرانسفارمر کی بجلی کی رسد میں کلیدی حیثیت کو اجاگر کریں۔

ٹرانسفارمر ایک برقی ڈویس ہے جو برقی دباو اور برقی رو کو بڑھا یا گھٹا سکتا ہے، مختلف برقی تعدادوں پر ۔ ٹرانسفارمر کی رسد میں کئی حیثیتیں ہوتی ہیں جو اس کے استعمال کے مختلف پہلوؤں کو اجاگر کرتی ہیں:

ٹرانسفارمیشن ریٹی
ٹرانسفارمر کی بجلی کی رسد میں ایک اہم حیثیت ٹرانسفارمیشن ریٹیو ہے، جو بتاتا ہے کہ برقی دباو کتنا بڑھایا یا گھٹایا جا رہا ہے۔ ٹرانسفارمر کے ایک سائیڈ پر برقی دباو داخل ہوتا ہے اور دوسری سائیڈ پر نکلتا ہے، اور ٹرانسفارمیشن ریٹیو اس دونوں دباو کا تناسب ہوتا ہے۔

فریکوئنس
ٹرانسفارمر کی بجلی کی رسد میں فریکوئنس بھی اہم حیثیت ہے، جو بتاتا ہے کہ برقی دباو کتنے ہرٹز پر ہے۔ اس حیثیت کا موازنہ مقامی برقی نظام کے ساتھ کیا جاتا ہے تاکہ برقی تعدادوں کو ہم آہنگ بنایا جا سکے۔

ٹرانسفارمر کی کارگر حرار
بڑے ٹرانسفارمر کی بجلی کی رسد میں حرارت کارگر ہوتی ہے، جو برقی دباو اور برقی رو کے بڑھنے سے پیدا ہوتی ہے۔ اس حرارت کو کنٹرول کرنے کے لئے ٹرانسفارمر میں کوئلس اور انسولیٹنگ آئل کا استعمال کیا جاتا ہے۔

ٹرانسفارمر کی کارگر ہدایت
ٹرانسفارمر کی بجلی کی رسد میں کارگر ہدایت بھی اہم ہوتی ہے۔ یہ بتاتا ہے کہ ٹرانسفارمر میں استعمال ہونے والے مواد کس قسم کی ہدایت دیتی ہے اور اس کا ٹرانسفارمر کے عمل میں کیا کردار ہوتا ہے۔

ٹرانسفارمر کی کارگر کمی
ٹرانسفارمر کی بجلی کی رسد میں کارگر کمیت بھی اہم ہوتی ہے، جو بتاتی ہے کہ ٹرانسفارمر کتنی بڑی یا چھوٹی ہے۔ کمیت کا اثر ٹرانسفارمر کی ساخت اور نقل و حرکت میں پیش آتا ہے۔

— برقی گھنٹی کے سرکٹ کی وضاحت کریں یہ کس طرح کام کرتا ہے؟

برقی گھنٹی کا سرکٹ ایک سادہ میکانیکل اور برقی نظام ہوتا ہے جو برقی گھنٹی کو چلانے کے لئے ڈیزائن کیا جاتا ہے۔ یہاں برقی گھنٹی کے عام سرکٹ کا تشریحی خاکہ دیا گیا ہے

برقی گھنٹی کے سرکٹ کی اہم اجزاء

برقی گھنٹی

برقی گھنٹی خود ہی اہم اجزاء میں سے ایک ہے۔ گھنٹی کی گھن ہر بجنے پر حرکت کرتی ہے اور گھنٹی کو بجاتی ہے۔

موٹر

موٹر گھنٹی کو بجانے کے لئے استعمال ہوتی ہے۔ جب گھنٹی کو بجانے کا اشارہ ملتا ہے، موٹر چالو ہوتی ہے اور گھنٹی کی گھن کو گھماتی ہے۔

میکانیکل گیرو

گھنٹی کی گھن کو ٹھیک وقت پر گھمانے کے لئے ایک میکانیکل گیرو کا استعمال ہوتا ہے۔

برقی سرکٹ

برقی گھنٹی کو چلانے والے برقی سرکٹ میں ایک سوئچ یا ٹائمنگ ڈوائس ہوتا ہے جو موٹر کو چالو یا بند کرنے کا اشارہ فراہم کرتا ہے۔

پاور سورس

برقی گھنٹی کو چلانے کے لئے یکسر پاور سورس، مثل برقی دباو کی فراہمی یا بیٹری، درکار ہوتا ہے۔

برقی گھنٹی کا کام

سوئچ یا ٹائمنگ ڈوائس

برقی گھنٹی کو چلانے یا بند کرنے کے لئے ایک سوئچ یا ٹائمنگ ڈوائس موجود ہوتا ہے۔ جب یہ ڈوائس چالو ہوتا ہے، تو برقی سرکٹ مکمل ہو جاتا ہے اور برقی گھنٹی کا سرکٹ فعال ہو جاتا ہے۔

موٹر کی چالان

  • برقی گھنٹی کی گھن چلانے کے لئے موٹر چالو ہوتی ہے جو برقی سرکٹ کے ذریعے ہوتی ہے۔ موٹر چلتے ہی گھنٹی کی گھن گھمتی ہے اور بجتی ہے۔

میکانیکل گیرو کی حرکت

  • گھنٹی کی گھن چلنے کے لئے میکانیکل گیرو کا استعمال ہوتا ہے جو گھنٹی کو ٹھیک وقت پر گھماتا ہے۔

سائر اجزاء کا اثرات

  • برقی گھنٹی کے سرکٹ میں دیگر میکانیکل اور برقی اجزاء بھی ہوتے ہیں جو گھنٹی کے مسلسل کام میں مدد فراہم کرتے ہیں۔

برقی گھنٹی کے سرکٹ کا مقصد ہوتا ہے کہ گھنٹی کو ٹھیک وقت پر بجایا جا سکے اور لوگ اہم اطلاعات یا وق

الیکٹریکل انرجی کیا ہے تشریح کریں۔

الیکٹریکل انرجی، یا بجلی کی شکل میں انرجی، وہ انرجی ہے جو برقی چارجوں کی حرکت سے حاصل ہوتی ہے۔ یہ ایک اہم وسیلہ ہے جو مختلف صنعتوں، گھروں، اور ٹرانسپورٹیشن میں استعمال ہوتی ہے اور زندگی کے مختلف پہلوؤں میں اہم ہے۔ الیکٹریکل انرجی کی تشریح مندرجہ ذیل ہے:

برقی چارج
الیکٹریکل انرجی کی بنیاد برقی چارجوں پر ہے۔ برقی چارجوں کو ذرات مثل الیکٹرانز اور پروٹانز حاصل کرتے ہیں جو ایٹموں کے ارد گرد گھومتے ہیں۔ ان چارجوں کی حرکت سے برقی انرجی حاصل ہوتی ہے۔

برقی دباو
برقی چارجوں کے مابین پر فرق کو برقی دباو کہتے ہیں۔ برقی دباو الیکٹریکل انرجی کو حرکت میں مبدل کرتا ہے۔ برقی دباو کو وولٹ (Volt) میں ناپا جاتا ہے۔

برقی رو
برقی چارجوں کی حرکت جو ایک سرے سے دوسرے سرے کی طرف ہوتی ہے کو برقی رو کہا جاتا ہے۔ برقی رو کو ایمپیئر (Ampere) میں ناپا جاتا ہے۔

برقی مزاحم
برقی رو کی حرکت میں رکاوٹ پیدا کرنے والے عنصروں کو برقی مزاحمت کہا جاتا ہے۔ برقی مزاحمت کو اوہم (Ohm) میں ناپا جاتا ہے۔

برقی قدرتیں
برقی رو کا اندازہ لینے کے لئے برقی دباو اور برقی رو کا ضرب حاصل کیا جاتا ہے جو برقی قدرت یا واٹ (Watt) میں ناپا جاتا ہے۔

برقی مقناطیسی اثرات
برقی رو کی حرکت سے مقناطیسی میدان پیدا ہوتا ہے جو مختلف اشیاء کو متاثر کرتا ہے اور الیکٹرومیگنیٹک انرجی پیدا ہوتی ہے۔

برقی مخابرات
الیکٹریکل انرجی کو برقی سگنلز کی شکل میں برقرار رکھنے اور منتقل کرنے کے لئے برقی مخابرات استعمال ہوتی ہے۔

الیکٹریکل انرجی ہماری روزمرہ کی زندگی میں اہم کردار ادا کرتی ہے اور مختلف طریقوں سے حاصل کی جاتی ہے، جیسے کہ برقی گھریلوں، صنعتی، اور تجارتی استعمال، جو ہمیں روشنی، گرمائیں، اور مختلف آسانیاں فراہم کرتی ہے۔

ایٹم کیا ہے اس کے حصول کے متعلق تفصیل سے بیان کریں۔

ایٹم

ایٹم ایک بنیادی ذرہ ہے جو مواد کی سب سے چھوٹی اکائی ہوتی ہے اور مادہ کو تشکیل دیتا ہے۔ ایٹمات مادہ کی بنیادی عناصر ہیں اور ان کے مختلف اقسام اور خواص ہوتی ہیں۔ ہر ایٹم مرکزی حصے میں ایک مثبت چارجہ رکھتا ہے جو نیوکلیوس کہلاتا ہے اور ارد گرد الیکٹرانز گھومتے ہیں۔

ایٹم کا حصول

ایٹمات کا حصول مختلف طریقوں سے ہوتا ہے۔

نباتاتی اور جانوری حصول
ایک طریقہ یہ ہے کہ زندگی کے عمل کے دوران نباتات اور جانور اپنے خوراک سے ایٹمات حاصل کرتے ہیں۔ جانور خوراک کو چباتے ہیں اور اس کی تحلیل کے دوران ایٹمات حاصل ہوتے ہیں۔

آسمانی جسمات
آسمان میں ہونے والے فضائی وقوعات، مثل کہ کمیٹس اور اسٹیرائیڈز، ایٹمات کو بناتے ہیں۔ یہ جسمات ہمیشہ آسمان میں موجود ہوتے ہیں اور زمین پر آنے والی بارش کے دوران ایٹمات زمین پر پتہ چلتے ہیں۔

اچھالیں
اچھالوں کی راکھ اور گیسوں میں موجود ایٹمات بھی ایٹمات کا حصول فراہم کرتے ہیں۔

ایٹمات کی تشکیل

ایٹمات کا حصول مختلف طریقوں سے ہوتا ہے، لیکن عام طور پر یہ آسمانی جسمات کی برابری میں ہوتا ہے۔ ایٹمات میں تین مختلف اقسام کے ذرات ہوتے ہیں

پروٹان

پروٹان نیوکلیوس کا حصہ ہوتا ہے اور اس کا بار مثبت ہوتا ہے۔

الیکٹران

الیکٹران نیوکلیوس کے چاردہ گھومتے ہیں اور ان کا بار منفی ہوتا ہے۔

نیوٹران

نیوٹران نیوکلیوس میں پایا جاتا ہے اور اس کا بار بے ہوتا ہے۔

ایٹم میں یہ تینوں اقسام کے ذرات مختلف ترتیب اور تعداد میں ہوتے ہیں جو مختلف عناصر کو بناتے ہیں۔ ایٹمات کی مختلف اقسام میں تبدیلیاں ہوتی ہیں، جو مختلف عناصر اور مرکبات کی پیداوار میں مدد فراہم کرتی ہیں۔

فلور پینٹ ٹیوب کی بناوٹ بیان کریں۔

فلور پینٹ ٹیوب ایک روشنی فیکٹری مینہ ہے جو فلوریسنٹ لائٹننگ کا حصہ ہے اور عام طور پر چھتوں، دفاتر، اور عام استعمال کی جگہوں میں استعمال ہوتا ہے۔ یہ نوری لیمپ کمپیوٹر ہوتا ہے جو فلوریسنٹ دھاتیں استعمال کرتا ہے تاکہ یہ روشنی فیکٹری مینہ کی چمک پیدا کر سکے۔

فلور پینٹ ٹیوب کی بناوٹ

ٹیوب کا بنیادی چھپ
فلور پینٹ ٹیوب کا بنیادی حصہ ایک لمبا، چوڑا، اور ہولو ٹیوب ہوتا ہے جو شیشے کی طرح ہوتا ہے۔ ٹیوب کے اندر ہوتی ہے ایک خالی سپیس جس میں ہوائی گیس موجود ہوتی ہے، عام طور پر ارگن گیس ہوتی ہے۔

کیتھوڈ یا کیسٹ ٹیوب
ٹیوب کے دونوں سرے پر چھپا ہوتا ہے ایک چھوٹا ٹیوب جسے کیتھوڈ یا کیسٹ ٹیوب کہتے ہیں۔ یہ ٹیوب ہیتر یا ایلیکٹرانک بیلسٹ کو چلانے والے برقی سرکٹ کو چھپانے کے لئے ہوتا ہے۔

فلورسنٹ پائینٹ
ٹیوب کے اندر فلورسنٹ پائینٹ لگا ہوتا ہے جو روشنی کو بھٹکاتا ہے اور یہ خود نوری لیمپ کو چمک دیتا ہے۔

پلاسٹک یا میٹل کی ٹیوب چھپ
ٹیوب کو چھپنے والا ہولو ٹیوب کا ارد گرد پلاسٹک یا میٹل کا ہوتا ہے جو ٹیوب کو محفوظ رکھتا ہے اور اسے ٹوٹنے سے بچاتا ہے۔

الیکٹرانک بیلسٹ
الیکٹرانک بیلسٹ ٹیوب کو چلانے والے برقی سرکٹ کو چھپانے والا حصہ ہوتا ہے جو ٹیوب کو بلبلہ بناتا ہے اور اس کی روشنی کو مستقیم کرتا ہے۔

استارٹر
استارٹر بھی ٹیوب کو چلانے میں مدد فراہم کرتا ہے۔ یہ ابتدائی بارقی سرکٹ کو بند کر کے ٹیوب کو چلاتا ہے۔

فلور پینٹ ٹیوب کی یہ بناوٹ اسے مستقیم روشن کرتی ہے جو کہ سستے ہوتے ہیں اور زیادہ عمر کے لئے معمولاً استعمال کی جاتی ہے۔

شارٹ سرکٹ کی تعریف کریں۔

شارٹ سرکٹ ایک برقی سرکٹ کی حالت ہے جب دو یا دو سے زیادہ برقی لائنز یا برقی تاروں کے بیچ مستقل راستے میں برقی رو کا رخ بن جاتا ہے۔ یعنی، شارٹ سرکٹ میں برقی رو ایک مخصوص راستے پر چلتا ہے جس پر چلنا مناسب نہیں ہوتا۔

شارٹ سرکٹ کی وجہ سے برقی رو کا رخ اچانک تبدیل ہو جاتا ہے اور اس میں اضافہ ہوتا ہے جو برقی آلات یا برقی چیزوں کو نقصان پیدا کر سکتا ہے۔ اس کا رخ تبدیل ہونے کی بنا پر برقی آلات میں زیادہ برقی دباو پیدا ہوتا ہے اور یہ آلات جل سکتے ہیں یا ناکارہ ہو سکتے ہیں۔

شارٹ سرکٹ کی وجہ سے برقی رو کا رخ اچانک تبدیل ہونے کی بنا پر برقی آلات میں زیادہ برقی دباو پیدا ہوتا ہے اور یہ آلات جل سکتے ہیں یا ناکارہ ہو سکتے ہیں۔ شارٹ سرکٹ کے باعث برقی رو مختلف راستوں سے بہکا کر آلات کو نقصان پیدا کرتا ہے۔

شارٹ سرکٹ مختلف وجوہات سے پیدا ہو سکتا ہے، جیسے کہ برقی تاروں کے دھچکے، کھلے تاروں کے جڑ، یا برقی آلات ک خرابی۔ یہ ایک خطرناک حالت ہوتی ہے اور فوراً اس پر عمل کرنا چاہئے تاکہ حادہ انقطاع پیش نہ آئے اور نقصانات متوقع کم ہوں۔– جوڑ کے اوپر انسولیشن ٹیپ کو لپیٹنے کی اہمیت اجاگر کریں۔

ایٹم کیا ہے اس کے حصول کے متعلق تفصیل سے بیان کریں۔

ایٹم

ایٹم، مادہ کی سب سے چھوٹی اکائی ہے جو ایک عنصر کو تشکیل دیتی ہے۔ یہ مادہ کی بنیادی ساختی اکائی ہے اور ہر ایک مادہ ایک یا متعدد ایٹمات سے ملکر بنتا ہے۔ ایٹمات نے ہماری علمی تشخیص کو بہتر بنایا ہے اور طبیعی علوم میں بہترین معلومات کا ذریعہ فراہم کیا ہے۔

ایٹم کا حصو

ایٹمات کا حصول مختلف طریقوں سے ہوتا ہے، لیکن عام طور پر یہ آسمانی جسمات کی برابری میں ہوتا ہے۔ زمین پر ایٹمات کا حصول مندرجہ ذیل طریقوں سے ہوتا ہے:

نباتاتی اور جانوری حصول
زندگی کے عمل کے دوران نباتات اور جانور اپنے خوراک سے ایٹمات حاصل کرتے ہیں۔ جانور خوراک کو چباتے ہیں اور اس کی تحلیل کے دوران ایٹمات حاصل ہوتے ہیں۔

آسمانی جسمات
آسمان میں ہونے والے فضائی وقوعات، مثل کہ کمیٹس اور اسٹیرائیڈز، ایٹمات کو بناتے ہیں۔ یہ جسمات ہمیشہ آسمان میں موجود ہوتے ہیں اور زمین پر آنے والی بارش کے دوران ایٹمات زمین پر پتہ چلتے ہیں۔

اچھالیں
اچھالوں کی راکھ اور گیسوں میں موجود ایٹمات بھی ایٹمات کا حصول فراہم کرتے ہیں۔

ایٹمات کی تشکیل

ایٹمات کا حصول مختلف طریقوں سے ہوتا ہے، لیکن عام طور پر یہ آسمانی جسمات کی برابری میں ہوتا ہے۔ ایٹمات میں تین مختلف اقسام کے ذرات ہوتے ہیں:

پروٹان

پروٹان نیوکلیوس کا حصہ ہوتا ہے اور اس کا بار مثبت ہوتا ہے۔

الیکٹران

الیکٹران نیوکلیوس کے چاردہ گھومتے ہیں اور ان کا بار منفی ہوتا ہے۔

نیوٹران

نیوٹران نیوکلیوس میں پایا جاتا ہے اور اس کا بار بے ہوتا ہے۔

ایٹم میں یہ تینوں اقسام کے ذرات مختلف ترتیب اور تعداد میں ہوتے ہیں جو مختلف عناصر کو بناتے ہیں۔ ایٹمات کی مختلف اقسام میں تبدیلیاں ہوتی ہیں، جو مختلف عناصر اور مرکبات کی پیداوار میں مدد فراہم کرتی ہیں۔

اوزاروں کو تفصیل سے بیان کریں۔

اوزاروں (Oxides) مختلف عناصر اور ایٹموں کے درمیان کیمیائی مرکبات ہیں جو ایٹموں کا ایک عنصر اور اکسیجن کا مرکب ہوتے ہیں۔ اکثر موادات ایک یا متعدد اوکسیجن ایٹمات کے ساتھ جڑ کر اوزار بناتی ہیں۔ اوکسیجن عنصر کی خصوصیت ہے کہ یہ زیادہ تر عناصر کے ساتھ جڑ کر مختلف اوزاروں کو پیدا کرتا ہے۔

اوزاروں کو عموماً مولیکولی یا یونیک رکھا جاتا ہے اور یہ مختلف حالتوں میں پائے جا سکتے ہیں، جیسے کہ گیس، چھائے، یا ٹھوسے حالت میں۔

اوزاروں کا سردی اور گرمی میں مختلف رفتاروں سے توسیع ہونا ایک خصوصیت ہے جو موادات کی خصوصیات میں تبدیلی لاتا ہے۔ یہ عمل موادات کے حالت، خواص، اور رداسی چھلن کی بنیاد ہوتا ہے۔

اوزاروں کی مثالیں

کاربن ڈائی‌آکسائیڈ

مولیکولی اوزار ہے جو کاربن اور اوکسیجن کے بیچ ہوتا ہے۔ یہ گیسی حالت میں پایا جاتا ہے اور اہم ہوتا ہے جیوترمائیں اور کاربن کی حصول میں۔

سلفر ڈائی‌آکسائیڈ

ایک اور گیسی اوزار ہے جو سلفر اور اوکسیجن کے بیچ ہوتا ہے۔ یہ جلدی حالت میں سلفر کی جلدی حصول اور صنعتی عملات میں استعمال ہوتا ہے۔

آئرن آکسائیڈ

ٹھوسے حالت میں پایا جاتا ہے اور ایک مہم اوزار ہے جو آئرن اور اوکسیجن کے بیچ ہوتا ہے۔ یہ لوہے کی زنگ میں موجود ہوتا ہے اور معروف خاکستری رنگ کے لئے مسئول ہوتا ہے۔

ہائیڈروجن ڈائی‌آکسائیڈ

معروف باسنی میں ہوتا ہے اور ایک مولیکولی اوزار ہے جو ہائیڈروجن اور اوکسیجن کے

Here is some other assignments solution….

Assignment No 1 Solution Course Code 220

Assignment No 1 Solution Course Code 313

Assignment No 1 Solution Course Code 219

Assignment No 2 Solution Course Code 219

Assignment No 1 Solution Course Code 217

Assignment No 2 Solution Course Code 217

Similar Posts

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *