Assignment No 1 Solution Course Code 218

دو ہا تھوں کی نشست بنانے کا طریقہ لکھیں؟

دو ہا تھوں کی نشست بنانے کا طریقہ یہاں دیا گیا ہے

خام مواد

دو ہا تھوں (یا دو چوتھائیں چھلوں)

ایک چٹی (یا کسی بھی مستقر چیز جس پر بیٹھا جا سکے)

موچ (اگر آپ کو مدد چاہئے تو)

پانی کی بوتل (آپکی راحت کے لئے)

طریقہ

مناسب جگہ چوزہ چھوڑیں

اپنی مناسب جگہ پر چوزہ چھوڑیں یا اگر آپکے پاس کسی چیز پر بیٹھنے کی سہولت نہیں ہے تو ایک چٹی کو چوزے کے نیچے رکھیں۔

ہا تھوں کی نشست

اب دو ہا تھوں لیں اور انہیں اپنی جگہ پر رکھیں۔

ہا تھوںوں کو ایک دوسرے کے ساتھ ملا دیں تاکہ یہ مکمل ہا تھوں بنیں۔

پیشہ چلائیں

اپنے چھوٹے چھوٹے پیشے (ٹوز) کو زمین پر رکھیں اور اپنی ہیلز کو اوپر اٹھائیں تاکہ آپکے ہا تھوں مکمل ہوں۔

اگر آپ کا مقصد زیادہ پیشہ چلائیں ہے تو زیادہ چھوٹی چھوٹی پیشے بنائیں اور اگر کم چلائیں ہے تو بڑی چھوٹی پیشے بنائیں۔

استراحت کریں:

مراقبت کریں

ہا تھوں کی نشست میں مراقبت ہونا بہت اہم ہے۔

جب تک آپ یہ نشست میں ہیں، اپنی چھاتی کو باہر کی طرف رکھیں اور سیدھی ہوکر رہیں۔

چونکہ ہا تھوں کی نشست کمزوری یا درد کا باعث بن سکتی ہے، لہٰذا اگر آپ کو کسی قسم کی مشکل ہو تو ڈاکٹر سے مشورہ کریں۔

نوٹ: ہر کسی کی جسمانی صحت اور حالت مختلف ہوتی ہے، لہٰذا یہ مناسب ہوتا ہے کہ آپ اگر ممکن ہو تو اپنے ڈاکٹر یا فزیوتھیراپسٹ کی رہنمائی لیں تاکہ آپ کو بہترین نتائج حاصل ہوں۔

جراثیم کش ادویات کے بارے میں مختصر الکھیں۔

جراثیم کش ادویات

جراثیم کش ادویات وہ دواں ہیں جو جسم میں موجود جراثیم، بیکٹیریا، وائرس، یا دوسرے میکروبز کو مارتی ہیں یا ان کی تضاد کرتی ہیں۔ یہ ادویات صحت کی حفاظت میں اہم کردار ادا کرتی ہیں اور مختلف بیماریوں کے علاج میں بھی استعمال ہوتی ہیں۔ یہاں کچھ عام جراثیم کش ادویات کا ذکر کیا گیا ہے:

انٹی بائیوٹکس

انٹی بائیوٹکس بیکٹیریا کے خلاف کارروائی کرتے ہیں اور بیماریوں کے علاج میں مدد فراہم کرتے ہیں۔

یہ بیماری کے قریبی ماہول کے مختلف حصوں میں موجود بیکٹیریا کو ختم کرتے ہیں۔

آنٹی وائرلز

آنٹی وائرلز وائرسوں کے خلاف کارروائی کرتے ہیں اور وائرسی بیماریوں کے علاج میں کارآمد ہیں۔

یہ وائرس کی نسلیں بننے سے روکتے ہیں اور ان کی تضاد کرتے ہیں۔

آنٹی فنگلز

آنٹی فنگلز قارچوں کے خلاف کارروائی کرتے ہیں اور قارچی بیماریوں کے علاج میں مدد فراہم کرتے ہیں۔

یہ جلدی بیماریوں، نخالیں، اور دیگر قارچی عدویات کا علاج کرتے ہیں۔

آنٹی سپٹیکس

آنٹی سپٹیکس جراثیم کو مارنے اور ان کی نسلیں بننے سے روکنے کے لئے مستعمل ہوتے ہیں۔

یہ چھوٹے زخموں، کٹاؤں، اور چھالوں کو صاف کرنے کے لئے استعمال ہوتے ہیں۔

آنٹی بیکٹیریل ہینڈ واش

یہ ہینڈ واشز جراثیموں کو ہاتھ دھونے کے دوران مارنے اور ان کی نسلیں بننے سے روکنے کے لئے طریقہ فراہم کرتے ہیں۔

بیکٹیریائی انفیکشنوں سے بچنے کے لئے یہ اہم ہیں۔

آنٹی سپٹک لوشنز

آنٹی سپٹک لوشنز چھوٹے چھوٹے زخموں، کٹاؤں، اور جلن کے علاج میں استعمال ہوتے ہیں۔

ان میں جراثیم کو مارنے والے اجزاء ہوتے ہیں جو صحت کو بہتر بنانے میں مدد کرتے ہیں۔

آنٹی سپٹک گرگل کنس

آنٹی سپٹک گرگل کنس جبھی ہاتھ، گلہرہ یا منہ کے مختلف حصوں میں کچھ بھی آتا ہے، اسے صاف کرنے اور جراثیم کو مارنے کے لئے استعمال ہوتا

ابتدائی طبی امداد کے فوائد لکھیں۔

ابتدائی طبی امداد یعنی پہلے مدد کا فرض ہر شخص کو ہونا چاہئے۔ یہ تربیت یافتہ یا غیر تربیت یافتہ شخص ہر زمانے میں اچھی طرح سے ابتدائی طبی امداد فراہم کر سکتا ہے اور اس کے فوائد مند ہیں:

زندگی بچانا

ابتدائی طبی امداد کا سب سے بڑا فائدہ یہ ہے کہ یہ زندگی بچانے میں مدد فراہم کرتی ہے۔

حاد حالتوں میں، جیسے کے حادہ، دل کا دورہ، یا حاد چوٹ، اچھی ابتدائی طبی امداد زندگی کا فرصتیں فراہم کرتی ہے۔

صحتیابی میں بہتری

اچھی ابتدائی طبی امداد اصل مریضی کو کم کرتی ہے اور شخص کو جلد صحتیاب کرنے میں مدد فراہم کرتی ہے۔

زخموں، چوٹوں، یا دوسرے آکسیدینٹس کے مقابلے میں فوراً امداد فراہم کرنا بہترین صحتیابی میں مدد فراہم کرتا ہے۔

درست ہدایت

ابتدائی طبی امداد سیکھنے سے شخص کو درست ہدایت حاصل ہوتی ہے۔

کچھ ابتدائی طبی امداد کورسز شہریتیں ہوتے ہیں جو عام لوگوں کو زندگی بچانے اور حادثاتی صورتحال میں مدد فراہم کرنے میں مدد کرتی ہیں۔

وقتی مدد فراہم کرنا

اچھی ابتدائی طبی امداد دی جانے والی جلد مدد شخص کو فوراً مدد فراہم کرنے کا موقع دیتی ہے۔

حادثاتی صورتحال میں ہر لمحے کا حساب رکھنا اور فوراً مدد فراہم کرنا زندگی بچانے میں مؤثر ہوتا ہے۔

تحقیقات کی بنیاد

ابتدائی طبی امداد ایک مصداق سے بھرا ہوا پیدا کرنے کا راستہ فراہم کرتی ہے۔

یہ اہم ہے کہ جلد مدد فراہم کی جائے تاکہ زندگی بچائی جا سکے اور مصداقت اختیار کرنے والے فردوں کی حالت کو بہترین طریقے سے سمجھا جا سکے۔

مرض کا پہچان

ابتدائی طبی امداد شخص کو مرض یا آکسیدنٹ کی پہچان میں مدد فراہم کرتی ہے۔

صحتیابی میں بہتری کے لئے، شخص کو اپنے علامات اور حالتوں کو پہچاننے میں مدد ملتی ہے۔

پاپولیشن کی سلامت

اچھی ابتدائی طبی امداد ہر شہریتی کو اپنے ارد گرد کے ماہول میں مدد فراہم کرتی ہے۔

زخموں، بیماریوں، یا آکسیدنٹس کی صورتحال میں فوراً مدد فراہم کرنا پاپولیشن کی صحت ک

مرض کی علامات اور نشانیوں میں فرق واضع کریں۔

مرض کی علامات اور نشانیوں میں فرق واضع کرنے کے لئے ہمیں یہ معلومات درکار ہوتی ہیں کہ آپ کس قسم کے مرض کی بات کر رہے ہیں، کیونکہ ہر مرض کی علامات اور نشانیاں مختلف ہوتی ہیں۔ یہاں کچھ عام مرض کی علامات اور نشانیاں دی گئی ہیں:

مرض کی علامات

تب

علامات: جسمی حرارت میں اضافہ، شدت کا احساس، سردی شور اور پسینہ۔

سر درد

علامات: سر کا درد جو ایک خاص حصے یا پورے سر میں ہو سکتا ہے۔

چکر

علامات: چکرانا، بے ہوشی، یا گھومنے کا احساس۔

تھکاوٹ

علامات: بے چینی اور تھکاوٹ کا احساس۔

خستگی

علامات: کمزوری، میں چلی نہیں جاتی، یا جسمی کمی کا احساس۔

کھانسی

علامات: گلے میں خراش، سانس لینے میں مشکل، یا کھانسی کا ارتفاع۔

سانس لینے میں مشکل

علامات: دم بھرنے میں مشکل، چھاتی میں دکھنا، یا شدید چکرانا۔

مرض کی نشانیاں

تھکاوٹ

نشانی: دل کی دھڑکن میں کمی، دبی ہوئی چکرات یا ہوشیاری کا کم ہونا۔

تھنی

نشانی: جسم کے کسی حصے میں سوزش، سوجن، یا ریگ پڑنا۔

درد

نشانی: شدید درد یا تناو کا احساس۔

رنگ بدلنا

نشانی: چہرے یا جسم کے کسی حصے کا رنگ بدلنا، نیلا ہونا یا پیلا ہونا۔

حملہ

نشانی: مصروع ہو جانا، جسم کا کانپنا، یا بے ہوشی کا دورہ۔

خون بہاوٹ

نشانی: جسم کے کسی حصے سے خون کا نکلنا، ناکسان یا زخموں سے خون بہاوٹ۔

متعدد پرستاریں

نشانی: بار بار قیئ کرنا، الٹی ہونا، یا اسے متعدد دفعہ ہونا۔

تھکن

نشانی: پیشاب کی کمی، سوکھی ہوئی جلد، پیسے کی کمی، یا گندے پیشاب کی بو۔

یہاں دی گئی علامات اور نشانیاں عام ہیں اور مختلف مرضوں کیلئے مختلف ہوتی ہیں۔ آپ کو اگر کسی مرض کی شکایت ہو تو فوراً ڈاکٹر کی مشورہ حاصل کرنا چاہئے۔

مریض اگر قے کر رہا ہو تو فرسٹ ایڈر کو کیا کرنا چاہیے؟

اگر کوئی شخص قے کر رہا ہے، تو فرسٹ ایڈ کے دوران درج ذیل اقدامات کی جا سکتی ہیں

بچاؤ اور دیکھ بھال

مریض کو چھوڑنے سے پہلے، اس کی حفاظت اور بچاؤ یقینی بنائیں۔

چہرے کو الگ رکھیں اور خود بھی چہرہ چھوڑ کر دیکھ بھال کریں۔

سیفٹی پوزیشن

مریض کو ایک سیفٹی پوزیشن میں رکھیں۔ اگر ممکن ہو تو ایک سیدھا اور ٹیلے کے ساتھ پڑھا ہوا جگہ منتخب کریں۔

اس سے مریض کی چھاتی کا دباو کم ہوتا ہے اور قے کرتے وقت مزید مشکلات آتی ہیں۔

درست جانچ پڑتال

دیکھیں کہ قے کا زور کتنا ہے اور کیا کوئی اہم خطرہ ہے یا نہیں۔

قے میں خون ہونے یا متعدد مرتبہ قے آ رہا ہو تو فوراً ہسپتال جانے کا فیصلہ کریں۔

پانی پلائیں

مریض کو ٹھوڑا ٹھنڈا پانی پلائیں۔ چھوٹے چھوٹے چک میں پانی پلانا اچھا ہوتا ہے تاکہ وہ ہڈیوں میں اور جسم میں موجود نمی کو دوبارہ بھر سکے۔

چھٹی ہوئی چیزیں ہٹائیں

مریض کے قریبی حسن، چھٹائیاں، یا چھوٹے بچوں کو دور کریں تاکہ قے کرنے کے بعد اُن کا خطرہ کم ہو۔

چیک کریں

مریض کے چہرے کا رنگ، چٹی، اور خصوصیات کا چیک کریں تاکہ آپ اگر کوئی بڑی مشکل محسوس کریں تو فوراً ہسپتال لے جا سکیں۔

سہارا دیں

مریض کو سہارا دیں اور اسے ہر طرح کی ضروری مدد فراہم کریں۔

اگر قے بند ہو گیا ہے اور مریض محسوس ہو رہا ہے تو اچھی چیزیں کھانے کی پیشکش کریں۔

مریض کو اگر شدید قے کا حملہ آ رہا ہو یا اگر کوئی دیگر خطرہ ہو تو فوراً ایمرجنسی میں مدد حاصل کریں اور ہسپتال لے جائیں۔

مریض کی منتقلی ایک جگہ سے دوسری جگہ کیسے کی جاتی ہے؟ مفصل لکھیں۔

مریض کی منتقلی ایک جگہ سے دوسری جگہ ہونے والا عمل ہے جو معمولاً ہسپتال، ایمرجنسی یا اچھے صحت کی فراہمی کے لئے کیا جاتا ہے۔ یہ منتقلی کئی مختلف طریقوں سے کی جا سکتی ہے اور اس کا انتخاب مریض کی حالت، طبی معلومات، اور منتقلی کی ضروریات پر مبنی ہوتا ہے۔ یہاں ایک مفصل راہنمائی دی گئی ہے:

. سانس ایمبولینس

استعمال: جب مریض کی حالت خیلی براہ راست ہوتی ہے اور اسے فوراً ایک ہسپتال یا مرکز میں منتقل کرنا ضروری ہوتا ہے۔

مزیتیں: یہ ایک تیز رفتار اور اہم سہولتوں کے ساتھ منتقلی فراہم کرتا ہے۔

ریگولر ایمبولینس

استعمال: عام طور پر زمینی حرکت میں ہسپتال یا مرکز کی طرف منتقلی کے لئے استعمال ہوتا ہے۔

مزیتیں: یہ عام طور پر مقامی منطقے میں منتقلی کرنے کے لئے مناسب ہوتا ہے اور اس کا استعمال حاد حالات یا غیر فوری حالات کے لئے کیا جاتا ہے۔

ہیلیکوپٹر

استعمال: جب مریض کو زمینی راستے سے منتقل کرنا مشکل ہوتا ہے اور فوری منتقلی کی ضرورت ہوتی ہے۔

مزیتیں: ہیلیکوپٹر فوریت کے ساتھ منتقلی فراہم کرتا ہے اور ریگولر ایمبولینس سے تیز رفتار ہوتا ہے۔

ٹرینسپورٹر

استعمال: معمولاً غیر فوری حالات میں اور طبی امکانات کے ساتھ ہسپتال یا مرکز کی منتقلی کے لئے استعمال ہوتا ہے۔

مزیتیں: مریض کی حالت کے مطابقت سے معتدل رفتار اور طبی امکانات فراہم کرتا ہے۔

اپنے ٹرانسپورٹ

استعمال: چند معمولی یا غیر فوری حالات میں، مریض کو اپنے ٹرانسپورٹ میں منتقل کرنا ممکن ہوتا ہے۔

مزیتیں: غیر فوری حالات میں مناسب ہوتا ہے اور طبی امکانات کا استفادہ اٹھایا جا سکتا ہے۔

اہم نکتہ

منتقلی کا فیصلہ: منتقلی کا فیصلہ ہمیشہ مریض کی حالت اور طبی معلومات پر مبنی ہوتا ہے۔

حکومتی ایجنسیوں کی مدد: عوامی صحت کے ادارے اور حکومتی ایجنسیاں مختلف طریقوں سے منتقلی کی مدد فراہم کرتی ہیں۔

ٹرین ایمبولینس: بعض علاقوں میں ٹرین ایمبولینس بھی موجود ہوتی ہے جو زمینی منتقلی میں مدد فراہم کرتی ہے۔

سٹریچر کی تیاری کیسے کی جاتی ہے نیز مریض کو سٹریچر پر ڈالنے کا طریقہ تحریر کریں۔

سٹریچر کی تیاری اور مریض کو سٹریچر پر ڈالنے کا طریقہ مندرجہ ذیل ہوتا ہے

سٹریچر کی تیاری

سٹریچر کا جائزہ

یہ سنجیدہ حالات میں استعمال ہونے والا ایک مہم ڈیوائس ہوتا ہے۔

سٹریچر کو دائیں طرف ہلکا تھیلے یا بیگ میں رکھا جاتا ہے تاکہ جلد پر زیادہ دباو نہ آئے۔

تصدیق

یہ سنجیدہ مریض کو سٹریچر پر ڈالنے سے پہلے اس کی ہالت کی تصدیق کرنا ضروری ہے۔

اگر ممکن ہو تو ایمبولینس یا پیشہ ورانہ ایمرجنسی ٹیم کی مدد حاصل کریں۔

تجہیزات کی تصدیق

سٹریچر پر ہر طرف ریلنگ یا بیلٹس ہوتی ہیں تاکہ مریض کو مضبوطی سے باندھا جا سکے۔

مریض کے لیے ہیڈ رسٹ، فوٹ رسٹ، اور سائیڈ ریلنگ یا ہینڈلز موجود ہوتے ہیں۔

مناسب لباس

سٹریچر کو صاف، چٹی پڑی، اور امن فراہم کرنے والے لباسوں سے ڈھانپا جاتا ہے۔

مریض کو سٹریچر پر ڈالنے کا طریقہ

تعاون

کم سے کم دو لوگوں کی ضرورت ہوتی ہے۔

مریض کی تیاری

مریض کو اہستہ اور ہلکے جگہ پر منتقل کریں۔

مریض کو ڈیمب فراہم کریں تاکہ وہ خود بھی سٹریچر پر چڑھ سکے۔

سٹریچر کو مستقر کریں

سٹریچر کو مستقر کریں اور مریض کو اس پر لیٹا دیں۔

مریض کو باندھیں

مریض کو سٹریچر پر باندھیں تاکہ وہ محکمی سے چڑھا رہے۔

ہینڈلز یا سائیڈ ریلنگ استعمال کرکے مریض کو مضبوط کریں۔

ہیڈ رسٹ

مریض کو ہیڈ رسٹ فراہم کریں تاکہ اس کا سر مضبوطی سے ٹھیک رہے۔

سلامتی چیک

مریض کی سلامتی کو چیک کریں اور اگر ضرورت ہو تو ایمبولینس کو بلانے کا فیصلہ کریں۔

آہستہ چلائیں

مریض کو آہستہ چلائیں تاکہ اور زیادہ آسانی سے ایمرجنسی خدمات حاصل ہو سکیں۔

مریض کا تنظیم

سٹریچر پر مریض کو ٹھیک سے تنظیم کریں تاکہ اس کو خطرے سے دور رکھا جا سکے۔

سٹریچر کو ہلکا اور محکمی سے استعمال کرنا بہت اہم ہے تاکہ مریض کو کوئی ضرر نہ ہو اور اسے بہترین ممکنہ طریقے سے ایمرجنسی حالات میں

کون شخص ابتدائی طبی امداد دینے کا مجاز ہوتا ہے نیز ابتدائی طبی امداد کے مقاصد تحریر کریں۔

ابتدائی طبی امداد دینے والا شخص “فرسٹ ایڈر” یا “ابتدائی طبی مدد دینے والا شخص” کہلاتا ہے۔ اس شخص کا مقصد ہوتا ہے پہلے چین کی صورت میں مصدومین کو فوراً اور مؤثر طور پر علاج کرنا اور ان کی صحت کو بچانا۔

ابتدائی طبی امداد کے مقاصد

زندگی بچانا

مصدوم کی زندگی کو بچانا اور اس کو فوراً ایمرجنسی صحتی ادارے یا ہسپتال منتقل کرنا۔

تسلیمات کا کمیٹمنٹ

مصدوم کو مؤثر طور پر ایمرجنسی صحتی تسلیمات دینا اور اس کی صحتیابی کیلئے تمام ممکنہ کوششیں کرنا۔

چوتھائی کا دکھنا

چوتھائی اور مصدوم کے دکھنے والے حصے کو صحتیابی کیلئے چیک کرنا اور مداوا کرنا۔

راحت دینا

مصدوم کو راحت دینا اور اس کو اور زیادہ آسانی سے ایمرجنسی خدمات حاصل کرنے کا مدد فراہم کرنا۔

شوک کا انتظام

مصدوم کو اور زیادہ مضبوط اور محکمی سے رکھنا تاکہ شوک کا انتظام کیا جا سکے۔

تنفس، دل، اور ہوائی راستوں کا انتظام

مصدوم کی تنفس، دل کی دھڑکن، اور ہوائی راستوں کو چیک کرنا اور ان کا مداوا کرنا۔

چھترول اور زخموں کا دیکھ بھال

چھترول کا انتظام کرنا اور زخموں کو صحیح طریقے سے دیکھ بھالنا۔

اطلاعات فراہم کرنا

ایمرجنسی ٹیم یا ہسپتال کو مصدوم کی حالت کے بارے میں فوراً اطلاعات فراہم کرنا۔

ہدایت دینا

مصدوم یا گواہین کو اور زیادہ مضبوط اور محکمی سے رکھنا اور چاہے حالت جو بھی ہو، اسے ہدایت دینا کہ کیسے اورتاریکی سے مدد حاصل کی جا سکتی ہے۔

فرسٹ ایڈر کا کردار بہت اہم ہوتا ہے اور اس کا تدریب حاصل کرنا ضروری ہوتا ہے تاکہ وہ ایمرجنسی صورتوں میں فوراً مدد فراہم کر سکے۔

رولر پٹیاں کیا ہوتی ہیں؟ ان کے بارے میں مفصل لکھیں۔

“رولر پٹیاں” وہ چیزیں ہیں جو چارپائیوں (rollers) یا گولیوں کی شکل کی ہوتی ہیں اور ان کو مختلف مصروفیتوں میں استعمال کیا جاتا ہے۔ یہ پٹیاں عام طور پر مختلف کارگریں، صنعتی پروجیکٹس، یا دیگر مصارف میں استعمال ہوتی ہیں۔ آپس میں چرخش کرنے کی اہلیت رکھتی ہیں اور یہ مصنوعی زیرہ ہوتی ہے جو گریز کرنے والے مواد کے ساتھ چل سکتی ہیں۔

رولر پٹیاں کے مختلف اقسام

گاڑیوں کی رولر پٹیاں

گاڑیوں کے انجنوں، ٹائرز، اور دوسرے مشینری کے حصوں میں استعمال ہوتی ہیں۔

صنعتی رولر پٹیاں

صنعتی پروسیسز میں استعمال ہوتی ہیں، جیسے کہ ٹیکسٹائل، چاپخانے، اور مختلف مصنوعات کی تخلیق میں۔

ترقیبی رولر پٹیاں

ترقیبی استعمالات کے لئے ہوتی ہیں، جیسے کہ تشہیر، ترقیبی مشینری، یا چکنی مصروفات میں۔

چھبڑوں والی رولر پٹیاں

چھبڑوں والی رولر پٹیاں، جو چھبڑوں یا لپیٹی ہوئی ہوتی ہیں، زیادہ مضبوطی اور مضبوطی فراہم کرنے میں مدد فراہم کرتی ہیں۔

ترقیبی رولرز

ترقیبی رولرز، جو ایک دوسرے کے ساتھ چرخش کرتے ہیں، مقامی ترقیبی کارروائیوں میں استعمال ہوتے ہیں۔

رولر پٹیاں کے ممکن استعمالات

صفائی

چرخش رولرز کو صفائی کے لئے استعمال کیا جاتا ہے، جو چیزوں کو صفا کرنے یا چمکانے کے لئے ہوتی ہیں۔

سینٹرلائنمنٹ

رولر پٹیاں مختلف مصارف میں سینٹرلائنمنٹ یا چرخش پیدا کرنے میں مدد فراہم کرتی ہیں۔

تخلیقی مصنوعات

ٹیکسٹائل صنعت، چاپخانے، اور دیگر تخلیقی مصنوعات کی تخلیق میں استعمال ہوتی ہیں۔

تشہیر

تشہیر یا ترقیبی مشینری میں استعمال ہوتی ہیں جو مختلف صنعتوں میں خریداروں کو دکھانے کے لئے ہوتی ہیں۔

آلات کی چرخش

چرخش رولر پٹیاں مختلف آلات کی چرخش میں مدد فراہم کرتی ہیں۔

رولر پٹیاں مختلف مصارف میں استعمال ہوتی ہیں اور ان کی مختلف اقسام مختلف صنعتوں میں مدد فراہم کرتی ہیں۔

فرسٹ ایڈر کی خصوصیات تحریر کریں ۔ فرسٹ ایڈر کے لیے کن ہدایات پر عمل کرنا ضروری ہے؟

فرسٹ ایڈر کا کردار اہم ہوتا ہے جب کسی نے حادثہ یا بیماری کا شکار ہوتا ہے اور آپ کو فوری امداد فراہم کرنا ہوتا ہے۔ یہ کسی بھی مصدوم کی صحت کو بچانے اور اس کو مستقبل کے علاج کے لئے مختصر مدتی تدابیر فراہم کرنے میں مدد فراہم کرتا ہے۔ فرسٹ ایڈر کی خصوصیات مندرجہ ذیل ہوتی ہیں:

تعلیم یافتگی

فرسٹ ایڈر کو مصدومین کی تعلیم یافتگی ہوتی ہے تاکہ وہ صحیح اور فوری ایمرجنسی امداد فراہم کر سکیں۔

ٹیم کا رہنمائی ہونا

  • فرسٹ ایڈر کو ٹیم کا رہنمائی کرنے اور مصدومین کو اچھی طرح سے تفصیلات سے سننے کی صلاحیت ہوتی ہے۔

ٹیم کے ساتھ تعاون

فرسٹ ایڈر کو ٹیم کے ساتھ تعاون اور ہم آہنگی کی صلاحیت ہوتی ہے تاکہ ایمرجنسی حالتوں میں بہترین امداد دی جا سکے۔

ٹیم کے لئے لیڈرشپ

فرسٹ ایڈر کو ٹیم کے لئے لیڈرشپ فراہم کرنے کی صلاحیت ہوتی ہے تاکہ امدادی کارروائیوں میں چیزوں کو مختصر میں رہنمائی کر سکے۔

فوری عمل

فرسٹ ایڈر کو فوراً عمل کرنے کی صلاحیت ہوتی ہے، چاہے وہ دل یا حادثاتی مصیبت کی صورت ہو۔

پنچھاپی

فرسٹ ایڈر کو پنچھاپی یعنی بلند کرنے کی صلاحیت ہوتی ہے تاکہ وہ مصدوم کو محکمی سے ٹھیک رکھ سکے۔

طبی علم یا ہسپتال تک منتقلی

فرسٹ ایڈر کو مصدوم کو طبی علم یا ہسپتال منتقل کرنے کی صلاحیت ہوتی ہے اگر ایسا ضروری ہو۔

ٹیم کے لئے راہنمائی فراہم کرنا

فرسٹ ایڈر کو ٹیم کو اور زیادہ بہترین امداد فراہم کرنے کی راہنمائی فراہم کرنا ہوتا ہے۔

فرسٹ ایڈر کو اہم ہدایات پر عمل کرنا ضروری ہوتا ہے تاکہ ایمرجنسی صورتوں میں مصدوم کو فوری اور صحیح امداد دی جا سکے اور اس کی صحت کو بچایا جا سکے۔

مختلف قسم کی پٹیاں بنانے کے بارے میں مفصل تحریر کریں۔

پٹیاں مختلف موادوں کو ملا کر بنائی جاتی ہیں اور انہیں مختلف مصارف کے لئے استعمال کیا جا سکتا ہے۔ یہاں مختلف قسم کی پٹیوں کی مصنوعات کے بارے میں مفصل تحریر دی گئی ہے:

کھانسی کی پٹیاں

اجزاء

شہد

ادرک کا رس

لیموں کا رس

ترکیب:

ادرک کا رس، شہد اور لیموں کا رس ملا کر چھوٹے ٹکڑوں میں کاٹ لیں۔

ہر چند ہی گھنٹوں میں ایک چمچ استعمال کریں۔

درد اور سوزش کی پٹیاں

اجزاء

ہلدی

زیتون کا تیل

شہد

ترکیب:

ہلدی کو زیتون کے تیل میں گرم کر کے چھلنے سے چھان لیں۔

گرم ملسی آئل میں شہد ملا کر پیسٹ بنا لیں۔

چھوٹے ٹکڑوں میں کاٹ کر استعمال کریں۔

زخموں کی پٹیاں

اجزاء

ہلدی

نیمبو کا رس

شہد

ترکیب:

ہلدی کو نیمبو کے رس اور شہد میں ملا کر پیسٹ بنا لیں۔

زخم پر لگائیں اور باندھیں۔

چہرے کی خوبصورتی کی پٹیاں

اجزاء

چکنی مٹھائی

ہلدی

چنے کا آٹا

ترکیب:

چکنی مٹھائی میں ہلدی اور چنے کا آٹا ملا کر پیسٹ بنا لیں۔

چہرے پر لگا کر خشک ہونے دیں اور پھر صابن سے دھو لیں۔

جوڑوں اور کمر درد کی پٹیاں

اجزاء

اخروٹ کا رس

زیتون کا تیل

ادرک کا رس

ترکیب:

ادرک کا رس، اخروٹ کا رس اور زیتون کے تیل کو ملا کر مسج کریں۔

جوڑوں پر مالش کریں اور باندھیں۔

کھجلی یا الرجی کی پٹیاں

اجزاء

دہی

بیسن

ہلدی

ترکیب:

دہی میں بیسن اور ہلدی ملا کر پیسٹ بنا لیں۔

الرجی والے حصے پر لگائیں اور خشک ہونے دیں۔

تنبیہ

پٹیاں بنانے سے پہلے چاہیے کہ آپ کسی بھی اجزاء کو استعمال کرنے سے پہلے اپنے جلد پر ٹیسٹ کریں تاکہ آپ کو کسی قسم کا چھوٹا یا بڑا نقصان نہ ہو۔ اگر آپ پرانی چھوٹی پٹیوں یا ہربل تھیراپیوں میں محتاج ہیں تو ڈاکٹر یا ہربل ٹھریسٹ کی رہنمائی لیں۔

سوجن اور درد کی شدت کم کرنے کے لیے کون کون سی پٹیاں استعمال ہوتی ہیں؟

سوجن اور درد کم کرنے کے لئے مختلف قسم کی پٹیاں استعمال کی جا سکتی ہیں جو مختلف موادوں کا استعمال کرتی ہیں۔ یہ پٹیاں مقدار میں معین موادات کا استعمال کرتی ہیں جو آپکی جلد کو مریضی یا اکھڑ پن سے بچانے میں مدد فراہم کر سکتی ہیں۔ یہاں کچھ پٹیوں کا ذکر ہے جو سوجن اور درد کم کرنے میں مدد فراہم کر سکتی ہیں:

ہلدی اور نیم پٹی

ہلدی اور نیم کا پائسٹ بنا کر متاثرہ جگہ پر لگائیں اور باندھیں۔ یہ دونوں مواد مختلف آنٹی-انفلیمیٹری اور آنٹی-بیکٹیریل خصوصیات رکھتے ہیں اور سوجن کو کم کرنے میں مدد فراہم کر سکتے ہیں۔

ادرک اور شہد کی پٹی

ادرک اور شہد کو ملا کر پیسٹ بنائیں اور متاثرہ جگہ پر لگائیں۔ ادرک اور شہد میں موجود آنٹی-انفلیمیٹری اور آنٹی-بیکٹیریل خصوصیات سوجن اور درد کم کرنے میں مدد فراہم کرتی ہیں۔

پاپائیا (پپیتہ) کی پٹی

  • پاپائیا کا گودا چھلکا یا اس کا رس چھلکے پر لگا کر متاثرہ جگہ پر باندھیں۔ پاپائیا میں پروٹینائیز اینزائمز ہوتا ہے جو سوجن کو کم کرنے میں مدد فراہم کرتا ہے۔

الویرا گیل کی پٹی

الویرا گیل کو متاثرہ جگہ پر لگائیں اور باندھیں۔ الویرا گیل میں آنٹی-انفلیمیٹری خصوصیات ہوتی ہیں جو سوجن اور درد کو کم کرنے میں مدد فراہم کرتی ہیں۔

شہد اور دھنیا کی پٹی

شہد اور دھنیا کو ملا کر پیسٹ بنائیں اور متاثرہ جگہ پر لگائیں۔ ان دونوں کے مواد میں آنٹی-انفلیمیٹری اور آنٹی-بیکٹیریل خصوصیات ہوتی ہیں جو سوجن کم کرنے میں مدد فراہم کرتی ہیں۔

میتھی کی پٹی

میتھی کے بیجوں کو پانی میں ڈال کر گھٹا لیں اور اس پانی کو متاثرہ جگہ پر لگائیں۔ میتھی میں موجود آنٹی-انفلیمیٹری خصوصیات سوجن کو کم کرنے میں مدد فراہم کرتی ہیں۔

تنبیہ: یہ پٹیاں صرف آسانی سے دستیاب اجزاء استعمال کرتی ہیں اور ہر شخص کی جلد اور صحتی حالت مختلف ہوتی ہے، لہٰذا موجودہ مصدور سے مشورہ لینا ہمیشہ بہتر ہوتا ہے۔ اگر سوجن یا درد میں بہتری نہ ہو تو فوراً ڈاکٹر سے رابطہ کریں۔

Similar Posts

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *